نیویارک میں قائم کمیٹی برائے پروٹیکٹ جرنلسٹس اور دیگر کا مودی کے نام اہم خط ،بڑا مطالبہ کردیا

  جمعرات‬‮ 27 اگست‬‮ 2020  |  17:04

نیو یارک(آن لائن) نیویارک میں قائم کمیٹی برائے پروٹیکٹ جرنلسٹس (سی پی جے) اور دنیا بھر سے لگ بھگ 400 صحافی ، ماہرین تعلیم ، پریس آزادی کے حامی ، اور سول سوسائٹی کے اراکین نے مقبوضہ کشمیر میں غیر قانونی طور پر حراست میںلئے گئے صحافی ، عاصف سلطان کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔غیر ملکی خبر رساں ادعارے کے مطابق کمیٹی برائے تحفظ صحافیوں (سی پی جے) نے اپنے ایک بیان میں کہا ، 397 ادیبوں ، صحافیوں ، ماہرین تعلیم ، پریس آزادی کے حامیوں ، اور سول سوسائٹی کے ممبروں نے بھارتی وزیر اعظم نریندر


مودی کو ایک خط لکھ کر فوری طور پر زور دیا ہے۔ کہ صحافی عاصف سلطان کو فوری رہا کیا جائے۔ خط میں کہا گیا ہے کہ 27 اگست 2020 کو ، مسٹر سلطان جو ایک علاقائی میگزین کشمیر بیانیہ کے ساتھ کام کرتا تھا اور نامعلوم دہشت گردوں سے پناہ لینے میں مبینہ طور پر ملوث ہونے کے الزام میں غیر قانونی سرگرمیوں سے بچاؤ ایکٹ کے تحت حراست میں لئے ہوئے دو سال پورے ہو گئے ۔ مبینہ عسکریت پسندوں سے انٹرویو کرنا یا ذرائع کے پاس ہونا جو حکومت پر تنقید کرتے ہیں وہ ایک صحافی کی نوکری کے دائرے میں ہے اور وہ انھیں کسی جرم میں ملوث نہیں کرتا ہے۔ سی پی جے نے لکھا ہے کہ کشمیر میں ہونے والے واقعات عوامی مفاد کے ہیں ، اور ان کا احاطہ کرنا عوامی خدمت ہے ، مجرمانہ کام نہیں۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

براڈ شیٹ

شریف الدین پیرزادہ عرف عام میں جدہ کے جادوگر کہلاتے تھے‘ یہ ملک کے واحد قانون دان تھے جو قانون سے ہر قسم کی گنجائش نکال لیتے تھے چناں چہ ایوب خان سے لے کر جنرل پرویز مشرف تک یہ ملک کے ہر آمر کے دست راست رہے‘ جنرل ضیاء الحق مرشد جب کہ جنرل پرویز مشرف انہیں ....مزید پڑھئے‎

شریف الدین پیرزادہ عرف عام میں جدہ کے جادوگر کہلاتے تھے‘ یہ ملک کے واحد قانون دان تھے جو قانون سے ہر قسم کی گنجائش نکال لیتے تھے چناں چہ ایوب خان سے لے کر جنرل پرویز مشرف تک یہ ملک کے ہر آمر کے دست راست رہے‘ جنرل ضیاء الحق مرشد جب کہ جنرل پرویز مشرف انہیں ....مزید پڑھئے‎