ننھا تیمور علی خان ابھی سے ارب پتی بن گیا

21  دسمبر‬‮  2018

ممبئی (این این آئی)تیمور علی خان ابھی سے ارب پتی بن چکے ہیں، بس انہیں چند سال مزید انتظار کرنا ہوگا۔ بھوپال کے جس عظیم الشان پٹودی ہاؤس میں ان کی پہلی سالگرہ منائی گئی وہ سترہ سال بعد یعنی جب تیمور 18 سال کے ہوجائیں گے، تو ان کی ملکیت بن جائے گا۔اس وقت اس گھر کی مالیت 800 کروڑ انڈین روپے (14 ارب پاکستانی روپے سے زائد) ہے اور اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔

بیس سال بعد وہ کہاں تک جا پہنچے گی۔بولی وڈ اداکارہ کرینہ کپور خان اور اداکار سیف علی خان کا بیٹا تیمور علی خان صرف 2 سال کی عمر میں ہی اپنے والدین سے زیادہ مقبول ہوچکا ہے۔20 دسمبر کو اپنی دوسری سالگرہ منانے والے تیمور کی تصاویر اور خبریں روزانہ ہی میڈیا کی زینت بنتی ہیں اور وہ میڈیا پر ایسے چھائے ہوئے ہیں کہ انہوں نے اپنے والدین کو بھی پیچھے چھوڑ دیا ہے۔درحقیقت انٹرنیٹ سرچنگ میں بھی وہ اپنے والدین سے آگے ہیں، یاہو کی 2018 میں ہارٹ تھروب شخصیات میں کرینہ کپور یا سیف علی خان کی بجائے ان کے بیٹے تیمور علی خان 5 ویں نمبر پر رہے۔کرینہ اور سیف نے اپنے بیٹے کی دوسری سالگرہ جنوبی افریقہ میں منائی جہاں وہ ایک اشتہار کی شوٹنگ میں مصروف ہیں۔پیدائش کے بعد سے ہی تیمور علی خان فوٹوگرافرز کی توجہ کا مرکز ہیں اور وہ خود بھی فوٹوگرافرز کو کافی اچھا ردعمل دیتے ہیں۔کرینہ اور سیف کی شادی 2012 میں ہوئی تھی، یہ کرینہ کپور کی پہلی جبکہ سیف علی خان کی دوسری شادی ہے۔اداکارہ کے پہلے بیٹے تیمور کی پیدائش 20 دسمبر 2016 کو ممبئی کے ایک ہسپتال میں ہوئی۔اس سے قبل سیف علی خان نے 1991 میں اداکارہ امریتا سنگھ سے شادی کی تھی، تاہم 2004 میں ان دونوں میں علیحدگی ہوگئی، امریتا سنگھ سے سیف علی خان کے دو بچے سارہ اور ابراہیم ہیں۔گزشتہ دنوں کافی ود کرن میں بات کرتے ہوئے سیف علی خان نے انکشاف کیا کہ انہیں رپورٹرز نے بتایا کہ تیمور کی تصاویر امیتابھ، شاہ رخ اور عامر جیسے اداکاروں سے بھی زیادہ پیسوں میں فروخت ہوتی ہیں یہی نہیں بلکہ اس سے قبل چند ہفتے پہلے یہ خبر بھی سامنے آئی تھی کہ تیمور علی خان کا خیال رکھنے والی آیا کی تنخواہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی سے بھی کہیں زیادہ ہے۔

موضوعات:



کالم



مرحوم نذیر ناجی(آخری حصہ)


ہمارے سیاست دان کا سب سے بڑا المیہ ہے یہ اہلیت…

مرحوم نذیر ناجی

نذیر ناجی صاحب کے ساتھ میرا چار ملاقاتوں اور…

گوہر اعجاز اور محسن نقوی

میں یہاں گوہر اعجاز اور محسن نقوی کی کیس سٹڈیز…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے (آخری حصہ)

میاں نواز شریف کانگریس کی مثال لیں‘ یہ دنیا کی…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے

بودھ مت کے قدیم لٹریچر کے مطابق مہاتما بودھ نے…

جنرل باجوہ سے مولانا کی ملاقاتیں

میری پچھلے سال جنرل قمر جاوید باجوہ سے متعدد…

گنڈا پور جیسی توپ

ہم تھوڑی دیر کے لیے جنوری 2022ء میں واپس چلے جاتے…

اب ہار مان لیں

خواجہ سعد رفیق دو نسلوں سے سیاست دان ہیں‘ ان…

خودکش حملہ آور

وہ شہری یونیورسٹی تھی اور ایم اے ماس کمیونی کیشن…

برداشت

بات بہت معمولی تھی‘ میں نے انہیں پانچ بجے کا…

کیا ضرورت تھی

میں اتفاق کرتا ہوں عدت میں نکاح کا کیس واقعی نہیں…