کاشت کا ر بہار یہ مونگ کی فصل کا باقاعدگی سے معائنہ کریں ،ز رعی ماہرین

  جمعرات‬‮ 9 اپریل‬‮ 2015  |  11:25

سلانوالی(نیوز ڈیسک) ز رعی ماہرین نے کا شت کا رو ں کو ہدایت کی ہے کہ و ہ بہار یہ مونگ کی اچھی پیداوار کے حصول کیلئے فصل کا باغور معائنہ کرتے رہیں اورفصل کو مختلف بیماریوں کے حملہ سے محفوظ رکھنے کیلئے بر وقت اقداما ت کریں مونگ کی بیماریوںمیں پتوں کا چڑمڑ وائر س مو ذیک پتوں کی دھبے دا ر بیماری تنے کی سرانڈ جڑوں کا گلنا پودوں کا سو کا اور کو ڑ ھ پن وغیر ہ شامل ہے پتوں کا چڑ مڑ ھ وائر س کے حملہ سے بیمار پودوں کے پتے چڑ


ھ مڑ ھ ہوجاتے ہیں یہ وائرس بیمار پودے سے صحت مند پود ے تک تیلے کے ذریعے منتقل ہوتا ہے پتوں کی دھبے دار بیماری کے حملے سے پتوں اور چھوٹی ٹہنیوں پر دھبے نمودار ہوتے ہیں جو وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ بڑے او ر گہرے بھور ے رنگ کے ہوجاتے ہیں اوربڑھوتر ی متاثر ہوتی ہے موذیک کا و ا ئر س سفید مکھی کے ذریعے پھیلتا ہے موذیک کے حملہ سے پتوں پر پیلے رنگ کے دھبے ظاہرہوتے ہیں جس سے کلوروفل کی کمی ہوجاتی ہے اور پو د ے اپنی خورا ک نہیںبناسکتے جس سے پیداوارمتاثرہوتی ہے پودے کا سو کا کی بیماری کا شکار پودے اچانک مرجھا جاتے ہیں اورپودے کی تعدا دمیں کمی پیداوار میں کمی کا با عث بنتی ہے تنے کی سڑاندکے حملہ سے تنوں کے نچلے حصے سے داغ نمودار ہوجاتے ہیں اورمتاثر ہ جگہ سے تنا سکڑ جاتا ہے آخر کار پودا مرجھا کر سو کھ جاتا ہے جڑوں کے گلنے کی بیماری سے متاثر ہ پودے کی جڑیں گل جاتی ہے اور پودا سو کھ جاتا ہے زرعی ماہرین نے سفارش کی ہے کہ کاشتکار مونگ کی فصل پر ان بیماریوں کا نظر آتے ہیں کھیت سے بیمار پودوں کو نکا ل کر تلف کردیں سفید مکھی اور تیلے کو بر وقت کنٹرو ل کریں حملہ شدید ہونے کی صورت میں کمیائی تدار ک کیلئے محکمہ زراعت توسیع و پیسٹ وارننگ کے مقامی فیلڈ عملہ کے مشور ہ سے مناسب زہریں سپرے کریں ۔


زیرو پوائنٹ

راﺅنڈ اباﺅٹ

اندر کمار گجرال بھارت کے 12 ویں وزیراعظم تھے‘ یہ 1997ءاور 1998ءکے درمیان ایک سال وزیراعظم رہے‘ اٹل بہاری واجپائی ان کے بعد وزیراعظم بنے تھے‘ گجرال جہلم میں پیدا ہوئے تھے‘ ان کی ساری تعلیم جہلم اور لاہور کی تھی اور یہ دل سے پاکستان اور بھارت کے تعلقات بہتر دیکھنا چاہتے تھے‘ میاں نواز شریف کے ....مزید پڑھئے‎

اندر کمار گجرال بھارت کے 12 ویں وزیراعظم تھے‘ یہ 1997ءاور 1998ءکے درمیان ایک سال وزیراعظم رہے‘ اٹل بہاری واجپائی ان کے بعد وزیراعظم بنے تھے‘ گجرال جہلم میں پیدا ہوئے تھے‘ ان کی ساری تعلیم جہلم اور لاہور کی تھی اور یہ دل سے پاکستان اور بھارت کے تعلقات بہتر دیکھنا چاہتے تھے‘ میاں نواز شریف کے ....مزید پڑھئے‎