سیاسی مخالفین کی چال کامیاب، اتحادی حکومت کو شدید دھچکالگ گیا

  اتوار‬‮ 24 جولائی‬‮ 2022  |  11:56

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پنجاب میں وزارت اعلیٰ کے منصب کے سیاسی دعویداروں کی بڑھتی ہوئی محاذ آرائی، الزامات مطالبات اور دھمکیوں نے معاشی بحران میں گھرے ہوئے ملک کو مزید پیچیدگیوں اور غیر یقینی صورتحال سے دوچار کر دیا ہے اور صورتحال اس امر

کی غمازی کر رہی ہے کہ اگر یہ معاملہ آنے والے ہفتے کے دوران بھی حل نہ ہوا تو حالات میں مزید بگاڑ پیدا ہوگا۔روزنامہ جنگ میں فاروق اقدس کی شائع خبر کے مطابق سیاسی حالات کی بے یقینی نے ملک کو معاشی بحران میں مبتلا کر دیا ہے حکومت مخالفین حکومت کے دیوالیہ ہونے کی باتیں کر رہے ہیں اور اس ساری صورتحال کے منفی اثرات براہ راست پاکستان کی معیشت اور ترقی پر پڑ رہے ہیں اور پاکستان کے ساتھ مختلف شعبوں اور سطحوں پر تعاون کرنے والے ممالک اور مالیاتی ادارے ان کڑے حالات میں خاموشی سے اس صورتحال سے اپنے اپنے دارالحکومتوں کو مطلع کر رہے ہیں، یہی وجہ ہے ملک میں عدم استحکام کے باعث نئی حکومت میں ابھی تک کوئی غیر ملکی سربراہ تو دور کی بات اہم بین الاقوامی شخصیت بھی پاکستان کے دورے پر نہیں آئی۔وفاقی دارالحکومت میں ’’سفارتی سرگرمیاں مفقود‘‘ ہوچکی ہیں، اہم ممالک کے ہائی کمشنرز اور سفارتکار دوطرفہ تعلقات میں پیشرفت کے حوالے سے ’’گرین سگنل‘‘ کے انتظار میں ہیں، خارجی سطح پر بھی فوری اور اہم فیصلوں میں تاخیرکی پیچیدگیاں آنے والے دنوں مشکلات کی شکل میں سامنے آئیں گی۔



موضوعات:

زیرو پوائنٹ

عمران خان کی جنرل باجوہ سے دو ملاقاتیں

یہ 18 اگست 2022ء کی شام تھی‘ صدر عارف علوی کی صاحب زادی نے رات آٹھ بجے اپنی چند سہیلیوں کو کھانے پر ایوان صدر بلا رکھا تھا لیکن پھر سوا سات بجے فون آیا اور صدر پرائیویٹ کار میں صرف ملٹری سیکرٹری کے ساتھ ایوان صدر سے نکل گئے‘ ان کے ساتھ پروٹوکول اور سیکورٹی کی کوئی گاڑی نہیں ....مزید پڑھئے‎

یہ 18 اگست 2022ء کی شام تھی‘ صدر عارف علوی کی صاحب زادی نے رات آٹھ بجے اپنی چند سہیلیوں کو کھانے پر ایوان صدر بلا رکھا تھا لیکن پھر سوا سات بجے فون آیا اور صدر پرائیویٹ کار میں صرف ملٹری سیکرٹری کے ساتھ ایوان صدر سے نکل گئے‘ ان کے ساتھ پروٹوکول اور سیکورٹی کی کوئی گاڑی نہیں ....مزید پڑھئے‎