بھارت کے خطرناک منصوبے کی اطلاع کس نے دی؟ اس بار کسی ابھے نندن کو چائے نہیں پلائی جائے گی، وزیراعظم، آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی کی ملاقات میں انتہائی اہم فیصلے

  جمعرات‬‮ 21 مئی‬‮‬‮ 2020  |  20:06

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) معروف صحافی و تجزیہ کار صابر شاکر نے اپنے یو ٹیوب چینل پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ انتہائی اہم ترین خبر شیئر کرنے جارہا ہوں یہ خبر اس طریقے سے میڈیا میں نہیں آئی، ہائی لائٹ نہیں کی گئی، دانستہ نہیں کی گئی، وزیراعظم عمران خان سے آرمی چیف، آئی ایس آئی چیف، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، اسد عمرکی انتہائی اہم ملاقات، آئی ایس آئی چیف کی تواتر کے ساتھ وزیراعظم سے ملاقات ہو رہی ہے،اس کے علاوہ چیئرمین جوائنٹ چیفس آف کمیٹی نے بھی وزیراعظم سے ملاقات کی ہے۔ سینئر تجزیہ کار نے


اندر کی بات بتاتے ہوئے کہا کہ بھارت کے جعلی فلیگ آپریشن کے ارادے سے دوست ملک نے پاکستان آگاہ کیا، پاکستان کو پہلے ہی انٹیلی جنس سے اطلاعات موصول ہو چکی تھیں، جس کے بعد وزیراعظم عمران خان نے اس حوالے سے ٹویٹ بھی کیا۔ صابر شاکر نے آرمی چیف اور وزیراعظم کی ملاقات بارے کہا کہ متوقع جعلی فلیگ آپریشن کو زیربحث لایا گیا اور بھارت کو منہ توڑ جواب دینے کا فیصلہ کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ اس اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اس بار کسی ابھے نندن کو چائے نہیں پلائی جائے گی، پاکستان کی طرف سے بہت سخت جواب دیا جائے گا۔وزیراعظم عمران خان نے اپنے ٹوئٹس میں کہا کہ بھارت کے 9 لاکھ عسکری اہلکار کشمیریوں پر ستم ڈھا رہے ہیں، کل ان قابض فوجیوں نے سری نگر میں 15 گھر نذر آتش کر دیے، ہندوتوا پر ایمان رکھنے والی قابض مودی سرکار چوتھے جنیوا کنونشن کی خلاف ورزی کرتے ہوئے آبادی کا تناسب بدلنے کے ساتھ مقبوضہ کشمیر میں جنگی جرائم کی مرتکب ہے، وزیراعظم عمران خان نے اپنے ٹوئٹ میں مزید کہا کہ میں دوبارہ دہرا رہا ہوں کہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں جاری قتل عام سے دنیا کی توجہ ہٹانے کے لئے بھارت کی جانب سے ایک جعلی کارروائی (فالس فلیگ آپریشن) کے امکانات نہایت روشن اور واضح ہیں۔


موضوعات: