پراسرار جانور کی موجودگی، جدید اور طاقتور کیمرے نے ماہرین کو شش و پنج میں ڈال دیا

  پیر‬‮ 12 ستمبر‬‮ 2016  |  14:31

بیجنگ (مانیٹرنگ ڈیسک) چین کے شمال مشرقی صوبے گان سو کے قدرتی جنگلات میں تبتی بارہ سنگھے کے قدموں کے نشان پائے گئے ہیں ،یہ نشان دو سے تین تبتی بارہ سنگھوں کے ہو سکتے ہیں ۔خیال کیا جاتا ہے کہ نر اور مادہ کی موجودگی میں یہاں ان کی بچے بھی ہو سکتے ہیں ،قدموں کے ان نشانا ت کا ایک جدید طاقتور کیمرے کے ذریعے پتہ چلایا گیا ہے ،تصویر سے ظاہر ہوتا ہے کہ یہ سورج نکلنے کے بعد یہ جانور خوراک کی تلاش میں اپنے ٹھکانوں سے باہر آئے ہو ں گے ،تبتی بارہ سنگھوں کا سراغ لگانے کے لئے کیمرے اپریل کے اوائل میں نصب کئے گئے تھے ، ان کیمروں کی مدد سے کام کرنے والا عملہ قدرتی ماحول میں جانوروں کو دیکھ سکتا ہے ، تبتی بارہ سنگھے کا شکار ممنوع ہے ،یہ ایک خاص قسم کا جانور ہے جو 20سے 20کے گروپوں میں رہتا ہے ، یہ مادہ فروری مارچ میں بچے دیتی ہے جو ایک سے زیادہ بھی ہو سکتے ہیں ،چین کا یہ قدرتی جنگل دو لاکھ ہیکٹر رقبے پر پھیلا ہوا ہے جس میں 51قسموں کے نادر جانور پائے جاتے ہیں جن میں پانڈا ، سر خ بندر ، تبتی بارہ سنگھا اور چیتا شامل ہیں ۔ ان تصاویر سے ماہرین حیاتیات کی اس جانور سے متعلق مختلف رائے سننے میں آ رہی ہے ۔



زیرو پوائنٹ

تیونس تمام

حبیب علی بورقیبہ تیونس کے بانی ہیں‘ وکیل اور سیاست دان تھے‘ قائداعظم محمد علی جناح اور اتاترک کے فین تھے اورپاکستان کی تشکیل کے وقت مصر میں پناہ گزین تھے‘ پاکستان بنا تو حبیب علی بورقیبہ نے قائداعظم کو مبارک باد کا ٹیلیکس بھجوایا اور اس کے ساتھ ہی تیونس اور پاکستان کے سفارتی تعلقات کا آغاز ہو گیا‘ ....مزید پڑھئے‎

حبیب علی بورقیبہ تیونس کے بانی ہیں‘ وکیل اور سیاست دان تھے‘ قائداعظم محمد علی جناح اور اتاترک کے فین تھے اورپاکستان کی تشکیل کے وقت مصر میں پناہ گزین تھے‘ پاکستان بنا تو حبیب علی بورقیبہ نے قائداعظم کو مبارک باد کا ٹیلیکس بھجوایا اور اس کے ساتھ ہی تیونس اور پاکستان کے سفارتی تعلقات کا آغاز ہو گیا‘ ....مزید پڑھئے‎