آئندہ سال کتنی چھٹیاں ہوں گی؟ تفصیلات جاری

26  دسمبر‬‮  2022

اسلام آباد(آئی این پی)وفاقی حکومت نے 2023میں عام تعطیلات اور اختیاری چھٹیوں کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا،حکومتی اعلامیے کے مطابق ملک میں سال 2023میں 38عام تعطیلات اور اختیاری چھٹیاں ہوں گی، جن میں سے 16عام جب کہ 22اختیاری چھٹیاں ہوں گی۔

کابینہ ڈویژن کے نوٹیفکیشن کے مطابق 5فروری 2023کو یوم کشمیر کی عام تعطیل ہوگی، 23مارچ 2023کو یوم پاکستان کی عام تعطیل ہوگی، یکم مئی کو یوم مزدور کی عام تعطیل ہوگی،22سے 24اپریل 2023عیدالفطر کی 3چھٹیاں ہوں گی، جب کہ 30،29جون، اور یکم جولائی 2023کو عیدالاضحی کی 3چھٹیاں ہوں گی، 27 اور 28جولائی 2023کو 10،9محرم کی چھٹیاں ہوں گی،14اگست 2023کو یوم آزادی کی عام تعطیل ہوگی، 28ستمبر 2023کو عید میلادالنبی پر عام تعطیل ہوگی،9 نومبر 2023کو یوم اقبال کی چھٹی ہوگی، 25دسمبر 2023کو یوم قائد اعظم اور کرسمس کی عام تعطیل ہوگی، جب کہ 26دسمبر 2023کو مسیحی ملازمین کے لیے یوم کرسمس پر عام تعطیل ہوگی،نوٹیفکیشن کے مطابق 2023کے لیے اسلامی چھٹیاں متوقع تاریخ کے حساب سے طے کی گئی ہیں، چاند کی رویت کے حساب سے چھٹیوں کا الگ نوٹیفکیشن بھی جاری کیا جائے گا۔ سال 2023میں کل 16عام تعطیلات میں سے 2اتوار کے روز ہوں گی،2 جنوری، 22مارچ اور 3جولائی کو بینکوں کی چھٹی ہوگی، مسلم حکومتی ملازمین کو ایک سال میں ایک سے زیادہ آپشنل چھٹی نہیں ملے گی، جب کہ غیر مسلم حکومتی ملازمین کو سال میں 3سے زائد آپشنل چھٹیاں نہیں ملیں گی۔

موضوعات:



کالم



مرحوم نذیر ناجی(آخری حصہ)


ہمارے سیاست دان کا سب سے بڑا المیہ ہے یہ اہلیت…

مرحوم نذیر ناجی

نذیر ناجی صاحب کے ساتھ میرا چار ملاقاتوں اور…

گوہر اعجاز اور محسن نقوی

میں یہاں گوہر اعجاز اور محسن نقوی کی کیس سٹڈیز…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے (آخری حصہ)

میاں نواز شریف کانگریس کی مثال لیں‘ یہ دنیا کی…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے

بودھ مت کے قدیم لٹریچر کے مطابق مہاتما بودھ نے…

جنرل باجوہ سے مولانا کی ملاقاتیں

میری پچھلے سال جنرل قمر جاوید باجوہ سے متعدد…

گنڈا پور جیسی توپ

ہم تھوڑی دیر کے لیے جنوری 2022ء میں واپس چلے جاتے…

اب ہار مان لیں

خواجہ سعد رفیق دو نسلوں سے سیاست دان ہیں‘ ان…

خودکش حملہ آور

وہ شہری یونیورسٹی تھی اور ایم اے ماس کمیونی کیشن…

برداشت

بات بہت معمولی تھی‘ میں نے انہیں پانچ بجے کا…

کیا ضرورت تھی

میں اتفاق کرتا ہوں عدت میں نکاح کا کیس واقعی نہیں…