والد کو زبردستی گھر سے نکالنے والے بیٹوں کو 3، 3 سال قید کی سزا

  اتوار‬‮ 26 جون‬‮ 2022  |  14:15

والد کو گھر سے نکالنے پر بیٹوں کو کڑی سزا

راولپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک)راولپنڈی کی مقامی عدالت نے والد کو گھر سے نکالنے والے بیٹوں اور ان کی والدہ کو تین تین برس قید کی سزا سنادی۔

میڈیا رپورٹس  کے مطابق محمد قاسم اور راحیلہ بیگم کی طلاق ہوگئی تھی جس کے بعد اس کی سابق اہلیہ نے اپنے بیٹوں زعفران اور فیضان کے ہمراہ گھر پر قبضہ کرکے قاسم کو گھر سے نکال دیا۔

اس پر بزرگ شہری  کی درخواست پر تھانہ روات نے جبری قبضے کے ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کی۔

ایڈیشنل سیشن جج افضل مجوکہ نے دونوں بیٹوں اور ان کی ماں کو  گھر پر قبضے اور بزرگ والد کو گھر سے نکالنے کے جرم میں تین تین سال قید کی سزا اور ایک ایک لاکھ روپے جرمانہ عائد کردیا۔

عدالتی حکم پر تینوں ماں بیٹوں کو کمرہ عدالت سے ہی گرفتار کرلیا گیا۔ عدالت نے حکم دیا ہے کہ گھر کا قبضہ خالی  کراکے اصل مالک محمد قاسم کے حوالے کیا جائے۔



موضوعات:

زیرو پوائنٹ

سانو۔۔ کی

سانو ۔۔کی پنجابی زبان کا ایک محاورہ یا ایکسپریشن ہے‘ اس کا مطلب ہوتا ہے ہمیں کیا فرق پڑتا ہے‘ ہمارے باپ کا کیا جاتا ہے‘ ہمارا کیا نقصان ہے یاپھر آئی ڈونٹ کیئر‘ ہم پنجابی لوگ اوپر سے لے کر نیچے تک اوسطاً دن میں تیس چالیس مرتبہ یہ فقرہ ضرور دہراتے ہیں لہٰذا اس کثرت استعمال کی وجہ ....مزید پڑھئے‎

سانو ۔۔کی پنجابی زبان کا ایک محاورہ یا ایکسپریشن ہے‘ اس کا مطلب ہوتا ہے ہمیں کیا فرق پڑتا ہے‘ ہمارے باپ کا کیا جاتا ہے‘ ہمارا کیا نقصان ہے یاپھر آئی ڈونٹ کیئر‘ ہم پنجابی لوگ اوپر سے لے کر نیچے تک اوسطاً دن میں تیس چالیس مرتبہ یہ فقرہ ضرور دہراتے ہیں لہٰذا اس کثرت استعمال کی وجہ ....مزید پڑھئے‎