کورونا کے علاج کیلئے گولی کے استعمال کی اجازت مل گئی

23  دسمبر‬‮  2021

اسلام آباد،پریٹوریا(مانیٹرنگ ڈیسک ، این این آئی)امریکی ادارے فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن (ایف ڈی اے) نے فائزر (Pfizer) کی کورونا کے علاج کی گولی کے استعمال کی منظوری دیدی ہے۔امریکی دوا ساز کمپنی فائزر کے حکام کے مطابق ان کی کمپنی کی تیار کردہ گولی پیکسلووڈ (Paxlovid) بیماری کے شدید ہونے کے خطرے کو 90 فیصد تک

کم کر سکتی ہے۔ایف ڈی اے کے مطابق گولی 12 سال اور زائد عمر کے افراد استعمال کر سکتے ہیں اور وبا کے خطرے کو کم کرنے کے لیے گولی دن میں دو مرتبہ 5 روز تک استعمال کرنی ہو گی۔امریکا نے دوا کے لیے دوا ساز کمپنی سے 5 اعشاریہ 3 ارب ڈالر کا معائدہ بھی کر لیا ہے۔دوسری جانب جنوبی افریقا میں ایک تحقیقی مطالعہ میں اومیکرون کی شدت کے بارے میں کرسمس سے قبل اچھی خبر پیش کی گئی ہے کہ اومیکرون سے متاثرہ افراد کے اسپتال میں ڈیلٹا سے متاثرہ افراد کے مقابلے میں جانے کا امکان کم تھا۔میڈیارپورٹس کے مطابق جنوبی افریقا کے قومی ادارہ برائے وبائی امراض(این آئی سی ڈی)اور بڑی یونیورسٹیوں کے مطالعے میں اکتوبر اورنومبرمیں جنوبی افریقا میں سامنے آنے والے اومیکرون وائرس کے اعداد وشمار کا اپریل اور نومبر کے درمیان ڈیلٹا شکل کے اعداد و شمار سے موازنہ کیا گیا ۔اس تحقیقی مطالعہ کے مصنفین نے یہ تجزیہ کیا کہ اومیکرون کے شکارافراد کے اسپتال میں داخلے کا خطرہ قریبا 80

فی صد کم تھا اور اسپتال میں داخل ہونے والوں کے لیے شدید بیماری کا خطرہ قریبا 30 فی صد کم تھا۔تاہم اس مطالعے کا اشاعت سے قبل ماہرین نے تنقیدی جائزہ نہیں لیا ۔مصنفین میں سے ایک این آئی سی ڈی کی پروفیسر شیرل کوہن نے کہا کہ جنوبی افریقامیں یہ وبائی مرض ہے اور اومیکرون اس طرح کا برتا کررہا ہے،جوکم شدید ہے۔ ہمارے اعدادو شمارفی الواقع دیگراقسام کے مقابلے میں اومیکرون کی کم شدت کی ایک مثبت کہانی تجویز کرتے ہیں۔اس کے باوجود مصنفین نے کوئی حتمی نتیجہ اخذ کرنے سے خبردار کیا کیونکہ امپیریل کالج لندن کی گذشتہ ہفتے جاری کردہ ایک تحقیق میں اس بات کا کوئی اشارہ نہیں ملا تھا کہ اومیکرون کم ضرررساں تھا۔

موضوعات:



کالم



سرمایہ منتوں سے نہیں آتا


آج سے دس سال قبل میاں شہباز شریف پنجاب کے وزیراعلیٰ…

اللہ کے حوالے

سبحان کمالیہ کا رہائشی ہے اور یہ اے ایس ایف میں…

موت کی دہلیز پر

باباجی کے پاس ہر سوال کا جواب ہوتا تھا‘ ساہو…

ایران اور ایرانی معاشرہ(آخری حصہ)

ایرانی ٹیکنالوجی میں آگے ہیں‘ انہوں نے 2011ء میں…

ایران اور ایرانی معاشرہ

ایران میں پاکستان کا تاثر اچھا نہیں ‘ ہم اگر…

سعدی کے شیراز میں

حافظ شیرازی اس زمانے کے چاہت فتح علی خان تھے‘…

اصفہان میں ایک دن

اصفہان کاشان سے دو گھنٹے کی ڈرائیور پر واقع ہے‘…

کاشان کے گلابوں میں

کاشان قم سے ڈیڑھ گھنٹے کی ڈرائیو پر ہے‘ یہ سارا…

شاہ ایران کے محلات

ہم نے امام خمینی کے تین مرلے کے گھر کے بعد شاہ…

امام خمینی کے گھر میں

تہران کے مال آف ایران نے مجھے واقعی متاثر کیا…

تہران میں تین دن

تہران مشہد سے 900کلو میٹر کے فاصلے پر ہے لہٰذا…