پیپلز پارٹی میں شمولیت اختیار کرنے کی خبریں منظور احمد وٹو نے حقیقت سے پردہ اٹھا دیا

26  جون‬‮  2021

حویلی لکھا(این این آئی)معروف بزرگ سینئر سیاسی راہنماسابق وزیراعلیٰ پنجاب میاں منظور احمد وٹو نے پیپلز پارٹی میں شمولیت اختیار کرنے والی تمام خبروں کو محض افواہیں اور عوام کو گمراہ کرنے کی چال قرار دے دیا ،میں آزاد حیثیت سے غیر مشروط طور پہ تحریک انصاف کو سپوٹ کرتا رہوں گا۔این این آئی سے خصوصی گفتگو ملکی سطح پہ معروف بزرگ سینئر سیاسی راہنما

اور سابق وزیراعلیٰ پنجاب میاں منظور احمد وٹو نے گزشتہ دنوں سابق صد ر مملکت آصف علی زرداری سے ملاقات کو منظور وٹو کی پیپلز پارٹی میں شمولیت قرار دیئے جانے کے حوالے سیگردش کرنے والی خبروں پہ اپنے ردِ عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ محض افواہیں ،غلط خبریں اور عوام کو گمراہ کرنے کی ایک چال ہے وہ آزاد حثیت سے حکمراں جماعت کی غیر مشروط سپوٹ کا سلسلہ جاری رکھیں گے،،این این آئی،، کو جاری منظور وٹو کے خصوصی ویڈیو بیان کے مطابق انہوں نے یہ بھی کہا کہ اُن کا بیٹا معظم وٹو ضلعی سینئر وائس پریزیڈینٹ پی ٹی آئی جبکہ دوسرا بیٹا خرم وٹو اور بیٹی روبینہ شاہین وٹو نے پی ٹی آئی کے ٹکٹ سے الیکشن میں حصہ لیا۔ انہوں نے کہا کہ میں نے کبھی وزیراعظم کا نام لیا ہو یا وزیراعلیٰ پنجاب کی شان میں گستاخی کی ہوجب تک میرے بچے پی،ٹی،آئی کا حصہ ہیں میں بھی آزاد حیثیت سے پی ٹی آئی کو سپوٹ کرتا رہوں گا۔میرا بیٹا وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے والد کے انتقال پہ اُن کے آبائی گائوں گیا ،میں کلثوم نواز کے انتقال پہ اُن کے جنازے میں شریک ہوا ،سیاست میں یہ سب چلتا ہے میں نے فیصل آباد تک پی ٹی آئی کے امیدواروں کو سپوٹ کیا ،سیاسی طور پر کسی سے ملاقات کرلینا کوئی غلط بات نہیں ہے میں تحریک انصاف کے ساتھ بطور اتحادی کھڑا ہوں ۔

موضوعات:



کالم



مرحوم نذیر ناجی(آخری حصہ)


ہمارے سیاست دان کا سب سے بڑا المیہ ہے یہ اہلیت…

مرحوم نذیر ناجی

نذیر ناجی صاحب کے ساتھ میرا چار ملاقاتوں اور…

گوہر اعجاز اور محسن نقوی

میں یہاں گوہر اعجاز اور محسن نقوی کی کیس سٹڈیز…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے (آخری حصہ)

میاں نواز شریف کانگریس کی مثال لیں‘ یہ دنیا کی…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے

بودھ مت کے قدیم لٹریچر کے مطابق مہاتما بودھ نے…

جنرل باجوہ سے مولانا کی ملاقاتیں

میری پچھلے سال جنرل قمر جاوید باجوہ سے متعدد…

گنڈا پور جیسی توپ

ہم تھوڑی دیر کے لیے جنوری 2022ء میں واپس چلے جاتے…

اب ہار مان لیں

خواجہ سعد رفیق دو نسلوں سے سیاست دان ہیں‘ ان…

خودکش حملہ آور

وہ شہری یونیورسٹی تھی اور ایم اے ماس کمیونی کیشن…

برداشت

بات بہت معمولی تھی‘ میں نے انہیں پانچ بجے کا…

کیا ضرورت تھی

میں اتفاق کرتا ہوں عدت میں نکاح کا کیس واقعی نہیں…