عثمان کاکڑ انتقال کر گئے

  پیر‬‮ 21 جون‬‮ 2021  |  14:16

اسلام آباد،لاہور(،مانیٹرنگ ڈیسک،آن لائن )پختونخواہ میپ کے سینئر رہنما عثمان کاکڑ انتقال کرگئے ، پارٹی کی جانب سے بھی تصدیق کردی گئی۔نجی ٹی وی کے مطابق سیکرٹری اطلاعات رضامحمد رضا نے بتایاکہ وہ کراچی کے نجی ہسپتال میں زیر علاج تھے۔جہاں ان کا انتقال ہوگیا، ڈپٹی چیئرمین سینٹ سلیم مانڈوی والا نے بتایا کہ عثمان کاکڑ کے انتقالکی اطلاع سینیٹ کی کمیٹی برائے خزانہ کے اجلاس میں ملی ،ان کے ایصال ثواب کے لیے فاتحہ خوانی بھی کی گئی ۔یاد رہے عثمان خان کاکڑکو جمعرات کے روز برین ہیمرج ہوا اور وہ اپنے گھرمیں گرکر زخمی ہوگئے تھے۔دریں اثنا سپیکر


قومی اسمبلی اسد قیصر اور ڈپٹی اسپیکر قاسم خان سوری نے عثمان خان کاکڑ کے انتقال پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ عثمان خان کاکڑ ایک محب وطن سیاسی اور سماجی رہنما تھے، اسپیکر و ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور قاسم خان سوری نے کہا کہ عثمان خان کاکڑ نے بلوچستان کی عوام کو ان کے حقوق دلانے کے لیے ہمیشہ آواز اٹھائی ہے۔انکا کہنا تھا کہ عثمان خان کاکڑ کی بلوچستان کی محرومیوں کے لیے سیاسی و سماجی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔ملک آج ایک محب وطن سیاسی اور سماجی رہنما سے محروم ہو گیا ہے انہوں نے کہا کہ عثمان خان کاکڑ کی وفات سے پیدا ہونے والا خلاء مدتوں پر نہیں ہو سکے گا۔۔دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ (ن)کے صدر قائد حزبِ اختلاف شہباز شریف کا  عثمان کاکڑ کے انتقال پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا ہے کہ عثمان کاکڑ جیسے بہادر، حق گو اور جمہوریت پسند رہنما کی وفات ملک کا بڑا نقصان ہے وہ اپنے اصولوں اور نظریات پر غیر متزلزل انداز میں ڈٹے رہے وہ عمر بھر آئین کی سربلندی، قانون کی حکمرانی، جمہوریت کی فرمانروائی اور شہری حقوق کے فروغ کے لئے سرگرم عمل رہے ملک اور قوم کے لئے ان کی خدمات تادیر یاد رکھی جائیں گی پشتونخواملی عوامی پارٹی کی قیادت اور کارکنان سے افسوس کرتے ہیں اللہ تعالیٰ مرحوم کو اپنے جوار رحمت میں بلند مرتبہ عطا فرمائے اور لواحقین کو صبر جمیل دے۔ آمین


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

صرف پانچ ہزار روپے کے لیے

لاہور میں 23 جون 2021ء کی صبح 11 بج کر8 منٹ پر جوہر ٹائون میں ایک خوف ناک کار بم دھماکا ہوا تھا‘ دھماکے میں تین افراد جاں بحق اور 22 زخمی ہوئے جب کہ 12 گاڑیاں اور7 عمارتیں تباہ ہو گئی تھیں‘ بم کا اصل ہدف لشکر طیبہ کے لیڈر حافظ سعید تھے‘ یہ دھماکے سے چند گلیوں کے ....مزید پڑھئے‎

لاہور میں 23 جون 2021ء کی صبح 11 بج کر8 منٹ پر جوہر ٹائون میں ایک خوف ناک کار بم دھماکا ہوا تھا‘ دھماکے میں تین افراد جاں بحق اور 22 زخمی ہوئے جب کہ 12 گاڑیاں اور7 عمارتیں تباہ ہو گئی تھیں‘ بم کا اصل ہدف لشکر طیبہ کے لیڈر حافظ سعید تھے‘ یہ دھماکے سے چند گلیوں کے ....مزید پڑھئے‎