سنجے دت کی فلم نے ریلیز سے قبل ہی کتنے کروڑ کما لئے ؟ مداح حیران

  پیر‬‮ 5 جون‬‮ 2017  |  6:00

ممبئی(این این آئی) بالی ووڈ میں ہر روز کمائی کے نئے نئے ریکارڈ ٹوٹ رہے ہیں کچھ برس پہلے 100 کروڑ کی کمائی بہت بڑی بات سمجھی جاتی تھی اب 200 کروڑ بھی کوئی بڑی بات نہیں لگتی ایسا ہی ایک ریکارڈ سنجے دت کی زندگی پر بننے والی فلم کے حصے میں آیا ہے۔سنجے دت کی زندگی پر بننے والی فلم سے بہت توقعات لگائی جارہی ہیں کیونکہ اس فلم کے ہدایتکار راج کمار ہیرانی ہیںپر بننے والی فلم ہے جس میں سنجے دت کا کردار رنبیر کپور ادا کررہے ہیں۔سنجے دت کی زندگی پر بننے والی اس فلم


کا نام تو ابھی تک نہیں رکھا گیا لیکن اس نے ریلیز سے قبل ہی کمائی کا ایسا نیا ریکارڈ قائم کرلیا ہے۔ جسے سن کر بالی ووڈ کے ماہرین کی بولتی ہی بند ہوگئی ہے اور یہ ہے کہ فلم کی ریلیز کے حقوق فلم ساز کمپنی فوکس اسٹار انڈیا نے 180 کروڑ روپے میں خریدے ہیں لیکن اس میں سیٹلائٹ حقوق شامل نہیں۔اور تو اور یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ یہ حقوق بھی 85 فیصد منافع کے تناسب سے فروخت ہوئے ہیں ، منافع میں 85 فیصد حصہ راج کمار ہیرانی جب کہ صرف 15 فیصد فوکس اسٹار انڈیا کا ہوگا۔راج کمار ہیرانی کی زیر ہدایت بننے والی فلموں 3 ایڈیٹس اور پی کے حقوق بھی اپنے وقتوں میں بہت مہنگے فروخت ہوئے تھے۔ ’’پی کے‘‘ کے حقوق 110 کروڑ میں فروخت ہوئے تھے اور اس میں سیٹلائٹ حقوق بھی شامل تھے لیکن سنجے دت کی فلم میں سیٹلائٹ حقوق شامل نہیں۔بھارتی تجارتی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ 3 ایڈیٹس اور پی کے کے ساتھ عامر خان کا نام جڑا تھا لیکن یہ فلم عامر خان کے بغیر بنائی جارہی ہے اس کے حقوق کا اتنے زیادہ پیسوں میں فروخت ہونا بہت بڑی بات ہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

قاسم پاشا کی گلیوں میں

آیا صوفیہ کے سامنے دھوپ پڑی تھی‘ آنکھیں چندھیا رہی تھیں‘ میں نے دھوپ سے بچنے کے لیے سر پر ٹوپی رکھ لی‘ آنکھیں ٹوپی کے چھجے کے نیچے آ گئیں اور اس کے ساتھ ہی ماحول بدل گیا‘ آسمان پر باسفورس کے سفید بگلے تیر رہے تھے‘ دائیں بائیں سیکڑوں سیاح تھے اور ان سیاحوں کے درمیان ....مزید پڑھئے‎

آیا صوفیہ کے سامنے دھوپ پڑی تھی‘ آنکھیں چندھیا رہی تھیں‘ میں نے دھوپ سے بچنے کے لیے سر پر ٹوپی رکھ لی‘ آنکھیں ٹوپی کے چھجے کے نیچے آ گئیں اور اس کے ساتھ ہی ماحول بدل گیا‘ آسمان پر باسفورس کے سفید بگلے تیر رہے تھے‘ دائیں بائیں سیکڑوں سیاح تھے اور ان سیاحوں کے درمیان ....مزید پڑھئے‎