سماجی رابطوں کی کمپنیاں ضابطہ اخلاق مرتب کریں،بھارتی الیکشن کمیشن

  جمعرات‬‮ 28 مارچ‬‮ 2019  |  14:00

نئی دہلی(این این آئی)بھارتی سیاسی جماعتوں سے سماجی رابطوں کے اکاؤنٹس سے نفرت انگیز بیانات اور جعلی خبریں فوری طور پر ہٹانے کا کہا گیا ہے۔ساتھ ہی ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ اخلاقی ضوابط کو لاگو کرنا مشکل ثابت ہو گا۔بھارتی انڈین الیکشن کمیشن کے سربراہ سنیل ارورا نے جرمن ریڈیو کو انٹرویومیں کہاکہ وہ چاہتے ہیں کہ سماجی رابطوں کی کمپنیاں ضابطہ اخلاق کو مرتب کریں تا کہ اِس پلیٹ فارم کا غلط استعمال نہ ہو سکے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ نفرت انگیز مواد کو فلیگ کر کے اْس کی تشہیر کو روکنے کے ساتھ ساتھ ایسا


کرنے والے کو قانون کے مطابق سزا بھی دی جائے گی۔ادھرسماجی رابطے کی مشہور ویب سائٹ فیس بک کی جانب سے کہا گیا کہ وہ بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں انتخابی مواد کی نگرانی کا آپریشن شروع کرنے والی ہے۔ یہ مرکزی دفتر سارے بھارت میں قائم ذیلی فیس بک کی کمپنیوں کے علاوہ مختلف بین الاقوامی دفاتر کے ساتھ بھی رابطے بحال کرتے ہوئے مقامی دفتروں کی رہنمائی کرے گا تا کہ کم از کم جھوٹی خبروں کے سلسلے کا قلع قمع کیا جا سکے۔


موضوعات: