فوجی ربوٹ تیار کرنے کی تیار ی

  ہفتہ‬‮ 18 اپریل‬‮ 2015  |  10:55

سان فرانسسکو(نیوز ڈیسک) آپ نے فلموں اور کہانیوں مےں تو روبورٹ آرمی دیکھی ہوگی لیکن امریکی ٹیکنالوجی کمپنی گوگل نے حقیقتاً روبوٹ فوج تیار کرنے کے لےے عملی قدم اٹھا لیا ہے۔کمپنی کی طرف سے ایک نئے پیٹنٹ کے لےے درخواست دی گئی ہے جس کے تحت کثیر تعداد مےں روبوٹ آلات کو ایک دوسرے سے جوڑا جاسکے گا اور انہیں کہیں سے بھی انٹر نیٹ کے ذریعے کنٹرول کیا جاسکے گا۔ ٹیکنالوجی ماہرین کا کہنا ہے کہ گوگل ایک ایسا نظام تیا رکرنے جارہا ہے کہ جس مےں اینڈرائیڈ آپریٹنگ سسٹم کے ذریعے روبوٹس کی ٹیموں کو احکامات دیئے


جاسکیں گے اور ان سے ہر طرح کے کام لیئے جاسکےں گے۔اس ٹیکنالوجی کے ذریعے عام استعمال کے روبوٹ بھی بنائے جاسکےں گے جنہیں عام لوگ گھریلو اور دفتری کاموں کے لیئے استعمال کرسکیں گے اور انہیں انٹرنیٹ کے ذریعے دنیا کے کسی بھی حصے سے کنٹرول کیا جاسکے گا۔فوجی مقاصد کے لیے بنائے جانے والے روبوٹ اسلحے کا استعمال کرسکیں گے اور فوجی ساز و سامان کی نقل و حمل کے لےے بھی استعمال ہوں گے۔ گوگل کے اس منصوبے سے ہر کوئی خوش نہیں ہے اور متعدد بڑے سائنسدان اس خدشے کا اظہار کرچکے ہیں کہ مصنوعی ذہانت کے حامل روبوٹ ایک دن انسانوں کے خلاف بغاوت کردیں گے۔مشہور ریاضی دان سٹیفن ہاکنگ بھی خبردار کرچکے ہیں کہ ذہانت کے حامل روبوٹ انسانی تہذیب کے خاتمے کا سبب بنےں گے۔