چلے تھے نواز شریف کو بدنام کرنے، گلے پڑ گیا براڈ شیٹ

  ہفتہ‬‮ 16 جنوری‬‮ 2021  |  23:04

لاہور(این این آئی) پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ براڈ شیٹ کیس حکومت کے منہ پر زور دار طمانچہ ہے، حکمرانوں نے قومی خزانہ برباد کردیا لیکن کچھ نہیں نکلا، نااہل،کرپٹ اورچوروں نے براڈ شیٹ سے بھی کمیشن مانگا،نواز شریف سر خرو ہوئے ہیں،19جنوری کو الیکشن کمیشن کے سامنے بھرپوراحتجاج کیاجائیگا، حکمرانوں کے بیانات صرف خودکو طفل تسلیاں دینے کیلئے ہیں حقیقت میں ان کے ہاتھ پاؤں اور سانسیں پھولی ہوئی ہیں۔شہباز شریف اور حمزہ شہباز سے احتساب عدالت میں ملاقات کیلئے آمد کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا


کہ حکومت جتنا جھوٹ بولتی ہے اتنی ہی بے نقاب ہوتی ہے، عوام اب عمران خان سے تنگ آ چکے ہیں، عمران خان وزیر اعظم نہیں اناڑی کھلاڑی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ابھی ایک مشیر کا استعفیٰ آیا ہے بہت سے استعفے آنا باقی ہیں،سلیکٹڈ وزیر اعظم کے مشیروں اور وزیروں کو معاملات بارے پتہ چلنا شروع ہوگیاہے۔انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم الیکشن کمیشن کے سامنے بھر پوراحتجاج کرے گی،انشااللہ ضمنی انتخابات میں جیت مسلم لیگ(ن) کی ہی ہوگی۔ پی ڈی ایم کی تحریک میں عوام شامل ہیں، ہم وہ کرنے جائیں گے جس سے یہ حکومت ٹھہر نہیں سکے گی۔ انہوں نے کہاکہ یہ حکومت نااہل اورنالائق ہے، حکمرانوں کے بیانات صرف خود کو طفل تسلیاں دینے کیلئے ہیں، حقیقت میں تو ان کے ہاتھ پاؤں اورسانسیں پھولی ہوئی ہیں اور انہیں کچھ سمجھ نہیں آرہی۔ انہوں نے کہا کہ مخالفین نواز شریف کو پھانسنے چلے تھے لیکن براڈ شیٹ ان کے گلے پڑ گیا،براڈ شیٹ کیس میں قومی خزانہ بربادکیاگیا لیکن کچھ نہیں نکلا، یہ حکومت کے منہ پر زوردار طمانچہ ہے، یہ اتنے نااہل، کرپٹ اور چورہیں کہ براڈ شیٹ سے بھی کمیشن مانگا ہے،اب یہ خود پھنس گے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ہر محاذ پر ناکام ہو چکی ہے،لاہور ایک خوبصورت شہر تھا جسے نااہلوں نے کوڑے دان اور کچرا کنڈی میں تبدیل کردیاہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

ایک قیمتی سوال

چارلس ٹی میٹکلف  1785ءمیں کلکتہ میں پیدا ہوا تھا‘ والد ایسٹ انڈیا کمپنی میں ڈائریکٹر تھا اور کلکتہ میں تعینات تھا‘ چارلس نے لندن سے تعلیم حاصل کی اور 1801ءمیں واپس آ کر کمپنی کی نوکری کر لی‘ وہ بنگال کے گورنر جنرل لارڈ ویسلے کا پرائیویٹ سیکرٹری تھا‘ برطانیہ اس وقت نپولین بونا پارٹ سے لڑ رہا ....مزید پڑھئے‎

چارلس ٹی میٹکلف  1785ءمیں کلکتہ میں پیدا ہوا تھا‘ والد ایسٹ انڈیا کمپنی میں ڈائریکٹر تھا اور کلکتہ میں تعینات تھا‘ چارلس نے لندن سے تعلیم حاصل کی اور 1801ءمیں واپس آ کر کمپنی کی نوکری کر لی‘ وہ بنگال کے گورنر جنرل لارڈ ویسلے کا پرائیویٹ سیکرٹری تھا‘ برطانیہ اس وقت نپولین بونا پارٹ سے لڑ رہا ....مزید پڑھئے‎