پراجیکٹ ایک افتتاح 2، حکومت کے بعد ن لیگ نے بھی اورنج لائن ٹرین منصوبے کا افتتاح کا اعلان کر دیا

  ہفتہ‬‮ 24 اکتوبر‬‮ 2020  |  22:46

لاہور(این این آئی)مسلم لیگ (ن) نے اورنج لائن ٹرین منصوبے کے افتتاح کا اعلان کر دیا، منصوبے کے افتتاح کی علامتی تقریب جین مندر چوک میں منعقد ہو گی جس میں پارٹی کے مرکزی رہنما، اراکین اسمبلی اور کارکنان شریک ہوں گے۔ لاہور کے جنرل سیکرٹری خواجہ عمران نذیر نے بتایا کہ اورنج لائن ٹرین چلنے کی خوشی میں افتتاح اور جشن کی تقریب منعقد کی جائے گی جس میںسردار ایاز صادق، خواجہ سعد رفیق، ملک پرویز اور،عطا اللہ تارڑ سمیت لیگی اراکین اسمبلی، عہدیداران اورکارکنان شریک ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) اورنج لائن ٹرین کے فعال


ہونے کا جشن منائے گی، یہ شہباز شریف کا خواب ہے جو شرمندہ تعبیر ہونے جا رہا ہے۔ لاہور کے عوام شہباز شریف سے اظہار تشکر کا دن منائیں گے،دنیا اورنج لائن کے منصوبے کو شہباز شریف کے نام سے جانتی ہے۔ واضح رہے کہ صوبائی دارالحکومت لاہور میں اورنج لائن ٹرین بروز اتوار سے اپنے مقررہ روٹ پر چلا دی جائے گی۔ ٹرین کی افتتاحی تقریب اتوار کو منعقد ہوگی۔ جس میں وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار ٹرین کی روانگی کا افتتاح کریں گے افتتاحی تقریب میں چینی قونصلیٹ کے افسران، صوبائی اور وفاقی وزراء و اراکین قومی اور صوبائی اسمبلی، آئی جی پولیس پنجاب، پاکستان ریلویز کے حکام اور دیگر ملحقہ اداروں کے اعلیٰ افسران شرکت کریں گے۔ منصوبے کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ ایک پانچ بوگیوں پر مشتمل ایک ٹرین میں 1 ہزار مسافر سفر کر سکیں گے جبکہ ٹرین کا کرایہ 40روپے فی مسافر ہوگا مذکورہ ٹرین روزانہ صبح ساڑھے 7 بجے سے چل کر رات ساڑھے 7 بجے تک چلا کرے گی۔ جبکہ اورنج لائن ٹرین کے روٹ پر دیگر روڈ پبلک ٹرانسپورٹ محلہ وار بند کی جائے گی۔ حکومت کے بعد ن لیگ نے بھی اورنج لائن ٹرین منصوبے کا افتتاح کا اعلان کر دیا


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

بڑے چودھری صاحب

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎