تحریک انصاف کے اہم رہنما ہنگامی بنیادوں پر اسلام آباد طلب، گورنر سندھ کی تبدیلی کا عندیہ

  جمعہ‬‮ 23 اکتوبر‬‮ 2020  |  19:34

اسلام آباد(آن لائن ) صدرِ مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما سابق صوبائی صدر سندھ نوابزادہ امیر بخش بھٹو کو ہنگامی بنیاد پر اسلام آباد طلب کرلیا۔ سندھ کے اہم معاملات پر تفصیلی گفتگو کی گئی امیر بخش بھٹو کی وزیراعظم عمران خان سے بھی ملاقات متوقع ہے ۔ذرائع کے مطابق بعض حلقوں کی طرف سے عندیہ دیا جارہا ہے کہ سندھ میں پیپلزپارٹی کوٹف ٹائم دینے کے لئے گورنر سندھ اندرونِ سندھ سے بنانے پر مشاورت جاری ہیں کیونکہ چند روز قبل سندھ پولیس کے روئیے کے باعث یہ ظاہر ہو گیا ہے کہ سندھ


پولیس جیالہ پولیس بن چکی ہے اور زرداری کی سندھ حکومت نے پولیس سمیت تمام ادارے یرغمال بنائے ہوئے ہیں اور سندھ کے تمام محکمے عوام کی فلاح و بہبود خدمت کے لئے نہیں بلکہ پی پی کی سندھ حکومت کے ہاتھوں کی کٹھ پتلیاں بنے ہوئے ہیں پولیس سمیت ان تمام اداروں کو پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت اپنے مخالفین کے خلاف استعمال کر کے جھوٹے مقدمات بناتی ہے اور عوام کو ان کے رحم و کرم پر چھوڑا ہوا ہے۔ ذرائع کے مطابق کیپٹن صفدر اعوان کی گرفتاری پرسندھ پولیس کے روئیے کے بعد پیپلز پارٹی کو وفاق کی جانب سے تین روز قبل یہ واضع پیغام دے دیا ہے کہ سندھ میں پیپلز پارٹی کی ہٹ دھرمی اور بادشاہت کو ختم کرنے کے لئے سندھ میں کسی وقت بھی گورنر راج نافذ کیا جا سکتا ہے جس کے بعد بلاول زرداری سمیت پوری پیپلز پارٹی پریشان ہے۔ ذرائع کے مطابق بعظ حلقوں اور قوتوں نے وزیراعظم عمران خان کو کہا ہے کہ سندھ میں پیپلز پارٹی سے نمٹنے کے لئے عمران اسماعیل کو گورنر سندھ کے عہدے سے ہٹا کر سابق وزیراعلیٰ سندھ سردار ممتاز علی بھٹو یا پھر امیر بخش بھٹو کو گورنر سندھ بنایا جائے۔ ذرائع کے مطابق جس کے لئے اسلام آباد میں پارٹی رہنمائوں کے ساتھ اہم مٹینگیں اور صلح مشورے جاری ہیں۔دوسری جانب وفاقی وزیر اطلاعات ونشریات سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہے کہ 15جنوری تک سابق وزیر اعظم نوازشریف جیل میں ہونگے ،وزیراعظم عمران خان کرپٹ ٹولے کے احتساب کیلئے پرعزم ہیں،ان کو نہیں چھوڑینگے ،لوٹا گیا پیسہ بھی وصول کرینگے ،کراچی واقعہ کے حوالے سے مریم نواز اور سندھ حکومت کے بیانات متضاد ہیں ،شاہی خاندان خود کو قانون سےبالاتر سمجھتا ہے ،یہ لوگ بھول گئے انہوں نے اپنے دور میں ماڈل ٹاؤن واقع میں خواتین کیساتھ کیا سلوک کیا؟ان لوگوں کی جانب سے محترمہ بے نظیر بھٹو کی کردار کشی سے سب واقف ہیں،یہ آپس میں جو ایک دوسرے کے ساتھ کھیل رہے ہیں اس سے ہمارا کوئی لینا دینا نہیں۔جمعہ کو یہاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہاکہ گزشتہ روز رات کو ہر چینل فوٹیجدکھائی گئی، کسی میڈیا ہاوس نے نہیں دکھایا کہ کہیں پر دروازہ ٹوٹا کہیں پر کھینچا تانی ہوئی، کیپٹن صفدر بڑے پروٹوک میں گاڑی میں بیٹھے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ مریم نواز اضطراب میں لگ رہی ہیں، مریم نواز نے آج متضاد باتیں کیں۔ انہوں نے کہاکہ گزشتہ ورز مریم نواز کے درباریوں نے چادراور چار دیواری کا ذکر کیا، یہ بھول گئے کہ اپنے دور میں چادر اور چار دیواری کا کتنا تحفظ کیا۔وزیر اطلاعات نے کہاکہ یہ بھول گئے کہ ماڈل ٹاون میں کس طرح حاملہ عورتوں کو مارا، بے نظیر بھٹو کی ہیلی کاپٹر سے تصویریں پھینکتے ہوئے چاردر اور چار دیواری کا خیال نہیں آیا۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

بڑے چودھری صاحب

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎