شہباز شریف کی آرمی چیف سے ملاقات،آرمی چیف نے کیا کہا؟ شاہد خاقان عباسی حقائق سامنے لے آئے

  بدھ‬‮ 23 ستمبر‬‮ 2020  |  21:51

لاہور (این این آئی) مسلم لیگ (ن) کے سینئر نائب صدر و سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ مریم نوازنے ٹھیک کہاکہ پارلیمانی معاملات پارلیمنٹ میں ہی حل ہونے چاہئیں، نوازشریف کو آرمی چیف ملاقات سے آگاہ کیا گیا اس کی معلومات نہیں، آرمی چیف سے ملاقاتاے پی سی کے موضوع پر نہیں تھی۔لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ آرمی چیف کی خواجہ آصف سمیت کسی بھی لیگی رہنما سے ون آن ون ملاقات نہیں ہوئی تاہم ملاقات خفیہ نہیں تھی عسکری دعوت پر تمام پارلیمانی پارٹیوں


کو مدعو کیا گیاتھا۔ شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ شہبازشریف کی آرمی چیف سے معمول کی ملاقات تھی اس کا اے پی سی سے کوئی تعلق نہیں،نوازشریف کو آگاہ کیاگیاکہ نہیں مجھے اس کا علم نہیں۔آرمی چیف نے خود کہاہے کہ ہم سیاست میں حصہ نہیں لے رہے۔مریم نوازنے ٹھیک کہاکہ پارلیمانی معاملات پارلیمنٹ میں ہی حل ہونے چاہئیں۔انہوں نے کہاکہ نوازشریف پر بھارت نوازی کا الزام لگانے والے وہ لوگ ہیں جو معیشت کو تباہ کرکے انڈیا کا فائدہ کررہے ہیں جنہوں نے مہنگائی کی انہوں نے بھارت کو فائدہ دیا،جو بھارت جاکر پاکستان کی فوج پر باتیں کرتے ہیں وہ بھارت کے دوست ہیں ،بھارت نواز وہ ہے جنہوں نے ملکی معیشت تباہ کی مہنگائی کی اور بھارت جاکر فوج کے خلاف باتیں کرتے ہیں وہ دوست ہیں نوازشریف دوست نہیں۔شہبازشریف کی گرفتاری کے سوال پر شاہد خاقان عباسی کاکہناتھاکہ گرفتاریاں ہوتی رہتی ہیں پارٹی ورکر چلائیں گے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

مولانا روم کے تین دروازے

ہم تیسرے دروازے سے اندر داخل ہوئے‘ درویش اس کو باب گستاخاں کہتے تھے‘ مولانا کے کمپاﺅنڈ سے نکلنے کے تین اور داخلے کا ایک دروازہ تھا‘ باب عام داخلے کا دروازہ تھا‘ کوئی بھی شخص اس دروازے سے مولانا تک پہنچ سکتا تھا‘شاہ شمس تبریز بھی اسی باب عام سے اندر آئے تھے‘ مولانا صحن میں تالاب ....مزید پڑھئے‎

ہم تیسرے دروازے سے اندر داخل ہوئے‘ درویش اس کو باب گستاخاں کہتے تھے‘ مولانا کے کمپاﺅنڈ سے نکلنے کے تین اور داخلے کا ایک دروازہ تھا‘ باب عام داخلے کا دروازہ تھا‘ کوئی بھی شخص اس دروازے سے مولانا تک پہنچ سکتا تھا‘شاہ شمس تبریز بھی اسی باب عام سے اندر آئے تھے‘ مولانا صحن میں تالاب ....مزید پڑھئے‎