سابق نگراں وزیراعظم میر ہزار خان کھوسہ کی دوسری شادی ان کےصاحبزادے رہنماپی ٹی آئی امجد خان نےوالد کو کس چیز کے حصول کیلئے دوسری شادی پر آمادہ کیا ؟ تہلکہ خیز انکشاف

  منگل‬‮ 22 ستمبر‬‮ 2020  |  20:54

ڈیرہ اللہ یار ( آن لائن ) سابق نگراں وزیراعظم و چیف جسٹس (ر) میر ہزار خان کھوسہ شرعی عدالت نے 91 برس کی عمر میں دوسری شادی کر لی۔تفصیلات کے مطابق سابق نگراں وزیراعظم و چیف جسٹس (ر) شرعی عدالت میر ہزار خان کھوسہ نے 91 سال کی عمر میں دوسری بار سہرا سجا لیا ہے۔میر ہزار خان کھوسہ صحبت پور کے گوٹھ کشمیر آباد سے دلہن بیاہ کر لائے ہیں۔بتایا گیا ہے کہ میر ہزار خان کھوسہ نے دو ماہ قبل مقامی وڈیرے کی بیوہ سے خفیہ نکاح کیا تھا۔شادی کی تقریب میں خاندان کے چند افراد شریک


ہوئے تھے۔میر ہزار خان کھوسہ کی پہلی بیوی سے 3 بیٹے ہیں جن کے نام برکت کھوسو ،امجد کھوسو اور شفقت کھوسو ہیں۔میڈیا رپورٹس کے مطابق میر ہزار خان کھوسہ اس وقت شدید علیل ہیں جب کہ ان کا علاج جاری ہے۔میر ہزار خان کھوسہ کی شادی کے حوالے سے باوثوق ذرائع کا کہنا ہے کہ ان کے صاحبزدے امجد کھوسو نے سابق وزیراعظم کو ملنے والی پنشن اور دیگر مراعات کے حصول کے لیے دوسری شادی کرنے پر آمادہ کیا۔میر ہزار خان کھوسہ کے دوسری شادی پر آمادہ ہونے کے بعد ان کی شادی ایک بیوہ خاتون سے کرنے کا فیصلہ کیا گیا جو کہ مقامی وڈیرے کی بیوہ ہیں۔دونوں کی نکاح کی تقریب کو خفیہ رکھا گیا تھا جس میں چند افراد نے ہی شرکت کی تھی۔واضح رہے کہ بلوچستان کے ضلع جعفرآباد کے قصبے اعظم خان میں 30ستمبر 1929 کو پیدا ہوئے تھے۔انہوں نے سندھ یونیورسٹی سے گریجویشن کی۔جب کہ کراچی یونیورسٹی سے وکالت کی ڈگری حاصل کی تھی۔میر ہزار خان کھوسہ پاکستان کے 18 ویں وزیراعظم منتخب ہوئے تھے۔وہ ایک جج تھے جب کہ وفاقی شرعی عدالت کے چیف جسٹس بھی رہے،۔میر ہزار خان کھوسہ پاکستان کے عبوری وزیراعظم بھی رہے۔میر ہزار خان کھوسہ کے تین صاحبزادے ہیں جن میں سے ایک صاحبزدے امجد خان کھوسو نے پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کی تھی


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

ڈائیلاگ اور صرف ڈائیلاگ

سینٹ ہونو رینا  فرانس کے علاقے نارمنڈی سے تعلق رکھتی تھیں‘ یہ کیتھولک نن تھیں‘ کنواری تھیں‘ نارمنڈی میںکیتھولک کا قتل عام شروع ہوا تو سینٹ ہونورینا کو بھی مار کر نعش دریائے سین میں پھینک دی گئی‘ یہ نعش بہتی بہتی کون فلوینس  پہنچ گئی‘ کون فلوینس پیرس سے 24 کلومیٹر کے فاصلے پر چھوٹا سا گاﺅں ....مزید پڑھئے‎

سینٹ ہونو رینا  فرانس کے علاقے نارمنڈی سے تعلق رکھتی تھیں‘ یہ کیتھولک نن تھیں‘ کنواری تھیں‘ نارمنڈی میںکیتھولک کا قتل عام شروع ہوا تو سینٹ ہونورینا کو بھی مار کر نعش دریائے سین میں پھینک دی گئی‘ یہ نعش بہتی بہتی کون فلوینس  پہنچ گئی‘ کون فلوینس پیرس سے 24 کلومیٹر کے فاصلے پر چھوٹا سا گاﺅں ....مزید پڑھئے‎