مریم پیشی:وکیل صفائی کے دلائل کے دوران ایسا کیا ہوا کہ جج بشیر مسکرانا شروع ہو گئے ،کمرہ عدالت قہقوں سے گونجتا رہا

  جمعہ‬‮ 19 جولائی‬‮ 2019  |  17:11

اسلام آباد( آن لائن )احتساب عدالت میں وکیل صفائی امجد پرویز کے دلائل پر جج بشیر مسکراتے رہے جبکہ کمرہ عدالت بھی قہقوں سے گونجتا رہا۔تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں سماعت کے آغاز میں احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نیب پراسکیوٹر سے استفسار کیا کہ آج اسلام آباد میں کرفیو کیوں لگا ہوا ہے ، حالات اتنے سنگین تو نہیں ہوئے جس پر پراسیکیوٹر نے انہیں بتایا گیا کہجگہ جگہ ناکوں کے باعث انہیں عدالت پہنچنے میں دشواری کا سامنا ہے ،کمرہ عدالت میں ویڈیو کی بھی بازگشت سنی گئی، وکیل صفائی امجد پرویز نے دوران دلائل


کہا کہ اپیل کا حق تیس دن کا ہوتا ہے اس کیس کا فیصلہ تو ہوئے ایک سال ہوگیا ہے ہم نے سمجھا کہ شاہد ویڈیو آنے کے بعد تیس دن ہوئے ہیں اس پر احتساب جج محمد بشیر مسکراتے رہے جبکہ کمرہ عدالت بھی قہقوں سے گونجتا رہا ۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

روکا روکی کا کھیل

میں آج سے چھ سال پہلے بائی روڈ اسلام آباد سے ملتان گیا تھا‘ وہ سفر مشکل اور ناقابل برداشت تھا‘ رات لاہور رکنا پڑا‘ اگلی صبح نکلے تو ملتان پہنچنے میں سات گھنٹے لگ گئے‘ سڑک خراب تھی اور اس کی مرمت جاری تھی لہٰذا گرمی‘ پسینہ اور خواری بھگتنا پڑی‘ ہفتے کے دن چھ سال بعد ایک بار ....مزید پڑھئے‎

میں آج سے چھ سال پہلے بائی روڈ اسلام آباد سے ملتان گیا تھا‘ وہ سفر مشکل اور ناقابل برداشت تھا‘ رات لاہور رکنا پڑا‘ اگلی صبح نکلے تو ملتان پہنچنے میں سات گھنٹے لگ گئے‘ سڑک خراب تھی اور اس کی مرمت جاری تھی لہٰذا گرمی‘ پسینہ اور خواری بھگتنا پڑی‘ ہفتے کے دن چھ سال بعد ایک بار ....مزید پڑھئے‎