بیروت دھماکے ، بندرگاہ کا لاپتا ملازم30گھنٹے بعد زندہ مل گیا وہ کیسے بچا،اب اس کی حالت کیسی ہے ؟ چونکا دینے والا انکشاف‎

  جمعہ‬‮ 7 اگست‬‮ 2020  |  12:56

بیروت (این این آئی)لبنان کے دارالحکومت بیروت میں منگل کو تباہ کن دھماکے کے بعد بندرگاہ کا لاپتا ہونے والا ایک ملازم تیس گھنٹے کے بعد زندہ حالت میں مل گیا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق ملازم امین الزاہد کی تصویر انسٹاگرام پر دھماکے کے بعد لاپتا افراد کی تلاش کے لیے بنائے گئے صفحے پر شائع کی گئی تھی۔مقامی میڈیا کے مطابق وہ خون آلود حالت میں بحر متوسط سے ملا ہے۔ایکامدادی ٹیم نے اس کو اپنی کشتی کے ذریعے سمندر سے نکالا تھا اور اس کے بعد اس کو بیروت کے رفیق حریری یونیورسٹی اسپتال میں داخل کرادیا گیا ۔سوشل


میڈیا کی بعض تحریروں کے مطابق امین الزاہد کا خاندان اس تک نہیں پہنچ سکا ہے۔تاہم فوری طور پر اس کے بارے میں مزید تفصیل جاری نہیں کی گئی ہے کہ وہ کیسے بچ پانے میں کامیاب ہوا ہے اور اس کی اس وقت حالت کیسی ہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

بالا مستری

ہم اگر حضرت عمر فاروقؓ کی شخصیت کو دو لفظوں میں بیان کرنا چاہیں تو ”عدل فاروقی“ لکھ دینا کافی ہو گا‘ حضرت عمرؓ انصاف کے معاملے میں انقلابی تھے‘ یہ عدل کرتے وقت شریعت سے بھی گنجائش نکال لیتے تھے مثلاً حجاز اور شام میں قحط پڑا‘ لوگوں نے بھوک سے تنگ آ کر خوراک چوری کرنا ....مزید پڑھئے‎

ہم اگر حضرت عمر فاروقؓ کی شخصیت کو دو لفظوں میں بیان کرنا چاہیں تو ”عدل فاروقی“ لکھ دینا کافی ہو گا‘ حضرت عمرؓ انصاف کے معاملے میں انقلابی تھے‘ یہ عدل کرتے وقت شریعت سے بھی گنجائش نکال لیتے تھے مثلاً حجاز اور شام میں قحط پڑا‘ لوگوں نے بھوک سے تنگ آ کر خوراک چوری کرنا ....مزید پڑھئے‎