تاریخ میں پہلی مرتبہ’ میڈیکل مرد‘نے جڑواں بچوں کو جنم دے دیا

  منگل‬‮ 10 فروری‬‮ 2015  |  2:58

نئی دلی   قدرت کا نظام کچھ ایسا ہے کہ بچے کو جنم دینے کی ذمہ داری عورت کو سونپی گئی ہے لیکن بعض اوقات قدرت ایسے حیرت انگیز کرشمات بھی دکھا دیتی ہے کہ جن پر یقین کرنا مشکل ہوتا ہے۔بھارت میں ایک 22 سالہ مرد نے جڑواں بچوں کو جنم دے دیا ہے اور وہ خود اور ڈاکٹر بھی حیران ہیں کہ یہ حیرت انگیز کام کیسے ممکن ہوا۔ اس شخص کی پیدائش بطور مرد ہوئی اسے کبھی بلوغت کے عمل سے نہیں گزرنا پڑا اور اس وقت بھی اس کے کروموسوم 95 فیصد مردانہ ایکس وائے کروموسوم ہیں۔ لیکن اس کے باوجود اس کے ہاں جڑواں بچوں کی پیدائش ہوگئی ہے۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ اس کی ظاہری شکل و صورت خواتین جیسی ہے لیکن اصل میں یہ چند سال قبل تک ناصرف اندرونی زنانہ اعضاءسے محروم تھا بلکہ اس میں بچہ دانی کا وجود بھی نہ ہونے کے برابر تھا۔ چونکہ اسے عورت بننے کا شوق تھا اس لئے اس نے تولیدی صحت کا علاج شروع کروایا اور ہارمونز کے ذریعے اندرونی اعضاءکی نشوونما کا عمل شروع کیا۔ بعدازاں اس نے ایک مرد کے ساتھ تعلق بھی استوار کرلیا اور اگرچہ اسے خود بھی امید نہیں تھی اور نہ ہی ڈاکٹروں کا خیال تھا کہ یہ ماں بننے کی صلاحیت رکھتا ہے لیکن اس کے حاملہ ہونے پر سب کی حیرت کی انتہا نہ رہی اور اب جڑواں بچوں کی پیدائش پر تو ہر سننے والا دنگ رہ گیا ہے۔ ڈاکٹر سنیل جندل کا کہنا ہے کہ ”ماں“ اور جڑواں بچے بخیریت ہیں بچوں میں سے ایک لڑکا اور ایک لڑکی ہے۔خبر کا حوالہ



زیرو پوائنٹ

گھوڑا اور قبر

میرا سوال سن کر وہ ٹکٹکی باندھ کر میری طرف دیکھنے لگے‘ میں نے مسکرا کر سوال دہرا دیا‘ وہ غصے سے بولے ’’بھاڑ میں جائے دنیا‘ مجھے کیا لوگ آٹھ ارب ہوں یا دس ارب‘‘ میں نے ہنس کر جواب دیا’’ آپ کی بات سو فیصد درست ہے‘ ہمیں اس سے واقعی کوئی فرق نہیں پڑتا‘ ہمارے لیے صرف اپنی ....مزید پڑھئے‎

میرا سوال سن کر وہ ٹکٹکی باندھ کر میری طرف دیکھنے لگے‘ میں نے مسکرا کر سوال دہرا دیا‘ وہ غصے سے بولے ’’بھاڑ میں جائے دنیا‘ مجھے کیا لوگ آٹھ ارب ہوں یا دس ارب‘‘ میں نے ہنس کر جواب دیا’’ آپ کی بات سو فیصد درست ہے‘ ہمیں اس سے واقعی کوئی فرق نہیں پڑتا‘ ہمارے لیے صرف اپنی ....مزید پڑھئے‎