روئی کے بھا ئومیں ہوشربا اضافہ، قیمت 11سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی

  جمعرات‬‮ 25 فروری‬‮ 2021  |  0:06

کراچی (این این آئی)روئی کے بھا ئومیں ہوشربا اضافہ، فی من بھائو 12000 روپے 11سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔ کراچی کاٹن ایسوسی ایشن کا اسپاٹ ریٹ فی من 11700 روپے پاکستان کی روئی کی تاریخ کے اسپاٹ ریٹ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔کراچی کاٹن بروکرز فورم کےچیئرمین نسیم عثمان نے بتایا کہ ملک میں کپاس کی پیداوار میں تشویشناک حد تک کمی اور بین الاقوامی کاٹن مارکیٹوں میں ہوشربا اضافہ رہا نیویارک کاٹن کے وعدے کا بھا ئوگزشتہ 15 روز میں فی پائونڈ 84 امریکن سینٹ کے نسبت 10 امریکن سینٹ کے اضافہ کے ساتھ


94 امریکن سینٹ کی گزشتہ کئی سالوں کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی اس سال ملک میں کپاس کی پیداوار 56 لاکھ گانٹھوں کی گزشتہ 30 سالوں سے کم تر ہوئی ہے مقامی ٹیکسٹائل ملز کی کل کھپت تقریبا ایک کروڑ 50 لاکھ گانٹھوں کی ہے۔اس طرح بیرون ممالک سے کپاس کی تقریبا 80 لاکھ گانٹھیں درآمد کرنی پڑے گی جس کی مالیت بنولہ، تیل اور کھل وغیرہ کی قیمتوں کو ملاتے ہوئے تقریبا 4 ارب ڈالر کی ہو جائے گی پہلے ہی ملک کی مالی حالت دیگر گو ہے۔نسیم عثمان نے بتایا کہ کپاس کی آئندہ سیزن کی پیداوار بڑھانے کیلئے حکومت کی جانب سے کوئی موثر حکمت عملی سامنے نہیں آرہی یہ افسوسناک بات ہے۔


زیرو پوائنٹ

استنبول یا دہلی ماڈل

میاں نواز شریف کے پاس دو آپشن ہیں‘ استنبول یا دہلی‘ ہم ان آپشنز کو ترکی یا انڈین ماڈل بھی کہہ سکتے ہیں۔ہم پہلے ترکی ماڈل کی طرف آتے ہیں‘ رجب طیب اردگان 1954ء میں استنبول میں قاسم پاشا کے علاقے میں پیدا ہوئے‘ غریب گھرانے سے تعلق رکھتے تھے‘ سکول سے واپسی پر گلیوں میں شربت بیچتے تھے‘بڑی مشکل ....مزید پڑھئے‎

میاں نواز شریف کے پاس دو آپشن ہیں‘ استنبول یا دہلی‘ ہم ان آپشنز کو ترکی یا انڈین ماڈل بھی کہہ سکتے ہیں۔ہم پہلے ترکی ماڈل کی طرف آتے ہیں‘ رجب طیب اردگان 1954ء میں استنبول میں قاسم پاشا کے علاقے میں پیدا ہوئے‘ غریب گھرانے سے تعلق رکھتے تھے‘ سکول سے واپسی پر گلیوں میں شربت بیچتے تھے‘بڑی مشکل ....مزید پڑھئے‎