رمضان المبارک کے دوران انڈسٹری کو بجلی کی مسلسل فراہمی یقینی بنائی جائے ، لاہور چیمبر

  منگل‬‮ 23 اپریل‬‮ 2019  |  10:05

لاہور(این این آئی ) لاہور چیمبر کے صدر الماس حیدر، سینئر نائب صدر خواجہ شہزاد ناصر اور نائب صدر فہیم الرحمن سہگل نے حکومت پر زور دیا ہے کہ رمضان المبارک کے دوران انڈسٹری کو بجلی کی بلاتعطل فراہمی یقینی بنائے، ماضی میں ماہ رمضان کے دوران صنعتوں کو بجلی کی بھاری لوڈشیڈنگ کا سامنا کرنا پڑا ،اب بہت سے پیداواری منصوبے مکمل ہونے کے بعد وافر بجلی موجود ہے جس سےگھریلو صارفین اور انڈسٹری دونوں کی ضروریات باآسانی پوری کی جاسکتی ہیں۔ ایک بیان میں لاہور چیمبر کے عہدیداروں نے کہا کہ صنعتو ں اور گھریلو صارفین دونوں کو


بجلی کی مسلسل فراہمی اشد ضروری ہے، ماہ رمضان کے دوران گرم موسم اور طلب میں اضافہ کو مدنظر رکھتے ہوئے پیشگی اقدامات اٹھائے اور سسٹم کو ہر لحاظ سے بہتر کرے تاکہ صنعتوں کے لیے بجلی کی معطلی جیسے چیلنجز سے نمٹا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ تمام ڈسٹری بیوشن کمپنیوں کے پاس ٹرانسفارمرز، کیبلز، کھمبوں اور سامان کا وافرسٹاک ہونا چاہیے تاکہ بوقت ضرورت کسی قلت کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ لاہور چیمبر کے عہدیداروں نے کہا کہ صنعتی شعبہ کی ترقی معاشی استحکام کی ضمانت ہے، اسے بلاتعطل بجلی کی فراہمی سمیت حکومت سے ہر قسم کا تعاون چاہیے تاکہ یہ روزگار کی فراہمی اور قیمتی زرمبادلہ ملک میں لانے کے لیے اپنا بھرپور کردار ادا کرسکے۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں بجلی کی فراہمی کے سسٹم پر اوورلوڈنگ کی وجہ سے بجلی معطل ہونے کے بڑے واقعات رونما ہوچکے ہیں جن کی وجہ سے نہ صرف عوام متاثر ہوئے بلکہ صنعتوں کو بھی بھاری نقصان کا سامنا کرنا پڑا۔انہوں نے کہا کہ مستقبل میں ایسے واقعات سے بچنے کے لیے بجلی کی ٹرانسمیشن اور ڈسٹری بیوشن کے سسٹم میں موجود کمزوریوں کو دور کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ سسٹم اپ گریڈیشن کے عمل میں ہرگز کوئی سستی نہ کی جائے کیونکہ اس سے صنعت، تجارت اور معیشت کو بھاری نقصان ہوسکتا ہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

روکا روکی کا کھیل

میں آج سے چھ سال پہلے بائی روڈ اسلام آباد سے ملتان گیا تھا‘ وہ سفر مشکل اور ناقابل برداشت تھا‘ رات لاہور رکنا پڑا‘ اگلی صبح نکلے تو ملتان پہنچنے میں سات گھنٹے لگ گئے‘ سڑک خراب تھی اور اس کی مرمت جاری تھی لہٰذا گرمی‘ پسینہ اور خواری بھگتنا پڑی‘ ہفتے کے دن چھ سال بعد ایک بار ....مزید پڑھئے‎

میں آج سے چھ سال پہلے بائی روڈ اسلام آباد سے ملتان گیا تھا‘ وہ سفر مشکل اور ناقابل برداشت تھا‘ رات لاہور رکنا پڑا‘ اگلی صبح نکلے تو ملتان پہنچنے میں سات گھنٹے لگ گئے‘ سڑک خراب تھی اور اس کی مرمت جاری تھی لہٰذا گرمی‘ پسینہ اور خواری بھگتنا پڑی‘ ہفتے کے دن چھ سال بعد ایک بار ....مزید پڑھئے‎