ملتان کے ڈاکٹر نے ننھے حارث کو مصنوعی ہاتھ لگانے کا وعدہ پورا کیا

  اتوار‬‮ 4 ‬‮نومبر‬‮ 2018  |  10:30

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) کے الیکٹرک کی غفلت کے باعث دونوں ہاتھوں سے محروم ہونے والے ننھے حارث کو نئے ہاتھ مل گئے  تفصیلات کے مطابق کراچی کا 11 سالہ رہائشی حارث بجلی کے تار گرنے کے باعث دونوں ہاتھوں سے محروم ہو گیا تھا، جس کی وجہ سے اس کی زندگی یکسر بدل گئی۔ اس سانحے کے بعد جہاں مختلف سرکاری و نجی اداروں کی جانب سے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے حارث کے اہل خانہ سے تعاون کا عزم کیا گیا، وہیں ملتان کے ایک ماہر مصنوعی اعضا ڈاکٹر اکرم نے بچےکو مصنوعی ہاتھ لگانے کا وعدہ کیا تھا ۔ تین


دن کے کامیاب آپریشن کے بعد حارث کو مصنوعی ہاتھ مل گئے، جس کے بعد وہ نہ صرف اشیا کو اٹھا سکتا ہے، بلکہ قلم پکڑ‌کر اپنا نام بھی لکھ سکتا ہے ۔ ڈاکٹر اکرم نے حارث کے اہل خانہ کو زندگی بھر کے لیے مصنوعی ہاتھوں کی فراہمی اور علاج کی یقین دہانی کروائی ہے، والدین پرامید ہیں کہ اس واقعے کے بعد حارث کی زندگی میں واضح بہتری آئے گی ۔ گیارہ سالہ حارث مدرسے کی چھت پر بجلی کے تار گرنے کے باعث دونوں ہاتھوں سے محروم ہوگیا تھا۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

نئی سیاسی کھچڑی

’’کرکٹ اگر مذہب ہوتا تو پورا برصغیر اس مذہب کا پیروکار ہوتا‘‘ یہ فقرہ کسی نے کہا تھا اور سچ کہا تھا‘ یہ واقعی حقیقت ہے سارک ممالک کرکٹ کے جنون میں مبتلا ہیں اور یہ خواہ کتنے ہی منقسم کیوں نہ ہوں یہ لوگ کرکٹ پر ایک ہو جاتے ہیں‘ پاکستان بھی اس جنون کی اعلیٰ ترین مثال ہے‘ ....مزید پڑھئے‎

’’کرکٹ اگر مذہب ہوتا تو پورا برصغیر اس مذہب کا پیروکار ہوتا‘‘ یہ فقرہ کسی نے کہا تھا اور سچ کہا تھا‘ یہ واقعی حقیقت ہے سارک ممالک کرکٹ کے جنون میں مبتلا ہیں اور یہ خواہ کتنے ہی منقسم کیوں نہ ہوں یہ لوگ کرکٹ پر ایک ہو جاتے ہیں‘ پاکستان بھی اس جنون کی اعلیٰ ترین مثال ہے‘ ....مزید پڑھئے‎