تھانہ نواں کوٹ پر حملے ، پولیس اہلکاروں کو یرغمال بنانے پر کالعدم تنظیم کے کارکنوں کیخلاف مقدمہ درج

  پیر‬‮ 19 اپریل‬‮ 2021  |  23:24

لاہور( این این آئی )ڈی ایس پی نواں کوٹ اور پولیس اہلکاروں کو اغوا ء کرنے کے معاملے پر تحریک لبیک کے 300 کارکنان پر مقدمہ درج کرلیا گیا۔مقدمہ تھانہ نواں کوٹ میں مظاہرین کے خلاف اے ایس آئی محمد اقبال کی مدعیت میں درج کیا گیا،مقدمے میں دہشتگردی کی دفعہ بھی شامل کی گئی ہے۔ایف آئی آر متن کے مطابقمشتعل مظاہرین نے تھانے میں گھس کر توڑ پھوڑ کی جن کے پاس پیٹرول بم اور تیزاب کی بوتلیں تھی۔ مظاہرین نے تھانے میں گھس کر آگ لگا دی اور ڈی ایس پی کو اہلکاروں سمیت اغوا ء کرلیا۔ڈی ایس


پی نے پولیس اسٹیشن پہنچ کر مظاہرین کو روکنے کی کوشش کی تاہم انہوں نے ڈی ایس پی کو بھی مارنا شروع کر دیا جس کے بعد مظاہرین ڈی ایس پی اور اہلکاروں کو اٹھا کر مرکز لے گئے۔مقدمے کے مطابق 300 کارکنان جو اسلحہ اور ڈنڈوں سے لیس تھے سی آئی اے میں جانے اور رینجرز پر بھی حملہ آور ہوئے۔ ایف آئی آر میں انسداد دہشتگردی ایکٹ کی دفعہ 7 سمیت دفعہ 365، 324، 452، 427، 186، 147، 148، 149، 436، 290، 291، 379 اور 109 شامل ہیں۔ایف آئی آر میں انس رضوی، سید ظہیر الحسن، طارق جاپانی، اعجاز، مہر قاسم، قاری فاروق، مولانا غلام عباس، مفتی عابد رضا قادری، حافظ عثمان شاہ، علی اعوان، سجاد، شاہد، زاہد، طلحہ ڈوگر، صوفی فیض رسول، ملک کاشف، ساجد عارف، غلام مرتضی، جاوید مغل اور علی ارسلان کے نام شامل ہیں۔ ڈی ایس پی نواں کوٹ اور پولیس اہلکاروں کو اغوا ء کرنے کے معاملے پر تحریک لبیک کے 300 کارکنان پر مقدمہ درج کرلیا گیا۔مقدمہ تھانہ نواں کوٹ میں مظاہرین کے خلاف اے ایس آئی محمد اقبال کی مدعیت میں درج کیا گیا،مقدمے میں دہشتگردی کی دفعہ بھی شامل کی گئی ہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

درمیان

یہ ایک ڈاکٹر کی کہانی ہے‘ ڈاکٹر صاحب اس وقت آسٹریلیا میں ہیں اور یہ وہاں ایسی شان دار زندگی گزار رہے ہیں جس کا ان کے کسی کلاس فیلو نے خواب تک نہیں دیکھا تھا‘ ہم سب لوگ زندگی میں ٹاپ کرنا چاہتے ہیں‘ ہم ہر کلاس میں اول آنا چاہتے ہیں‘ ہم بازار کا مہنگا ترین لباس خریدنا ....مزید پڑھئے‎

یہ ایک ڈاکٹر کی کہانی ہے‘ ڈاکٹر صاحب اس وقت آسٹریلیا میں ہیں اور یہ وہاں ایسی شان دار زندگی گزار رہے ہیں جس کا ان کے کسی کلاس فیلو نے خواب تک نہیں دیکھا تھا‘ ہم سب لوگ زندگی میں ٹاپ کرنا چاہتے ہیں‘ ہم ہر کلاس میں اول آنا چاہتے ہیں‘ ہم بازار کا مہنگا ترین لباس خریدنا ....مزید پڑھئے‎