قوم جاننا چاہتی ہے کہ کل لاہور میں کیا ہوا؟پہلے تنظیم کو کالعدم قرار دیا گیا پھر اسے جماعت سے مذاکرات ہو رہے ہیں ؟ ن لیگ برس پڑی

  پیر‬‮ 19 اپریل‬‮ 2021  |  21:46

اسلام آباد (این این آئی)سابق وزیر دفاع و مسلم لیگ (ن) کے رہنما خرم دستگیر نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت کی جانب سے کالعدم قرار دی گئی ، (ٹی ایل پی) کے ساتھ ہم نے کسی سفیر کو واپس بھیجنے کا معاہدہ نہیں کیا تھا۔ ایک انٹرویومیں خرم دستگیر خان نے کہاکہ پہلےایک تنظیم کو کالعدم قرار دیا گیا پھر اس سے مذاکرات کیے جا رہے ہیں، قوم جاننا چاہتی ہے کہ گزشتہ روز لاہور میں کیا ہوا؟انہوںنے کہاکہ حکومت نے کوئی اعداد و شمار جاری نہیں کیے، وزیر اعظم نے بھی حقائق سے آگاہ نہیں کیا۔خرم دستگیرنے کہاکہ


ایک تنظیم کو کالعدم قرار دینا انتہائی سنجیدہ معاملہ ہے، کالعدم جماعت کے 3 ایم پی ایز ہیں، ان کا کیا کریں گے؟ جماعت کو کالعدم قرار دینے کی کیاضرورت تھی؟ حکومت نے عجلت میں پارٹی کو کالعدم قرار دیا۔


زیرو پوائنٹ

درمیان

یہ ایک ڈاکٹر کی کہانی ہے‘ ڈاکٹر صاحب اس وقت آسٹریلیا میں ہیں اور یہ وہاں ایسی شان دار زندگی گزار رہے ہیں جس کا ان کے کسی کلاس فیلو نے خواب تک نہیں دیکھا تھا‘ ہم سب لوگ زندگی میں ٹاپ کرنا چاہتے ہیں‘ ہم ہر کلاس میں اول آنا چاہتے ہیں‘ ہم بازار کا مہنگا ترین لباس خریدنا ....مزید پڑھئے‎

یہ ایک ڈاکٹر کی کہانی ہے‘ ڈاکٹر صاحب اس وقت آسٹریلیا میں ہیں اور یہ وہاں ایسی شان دار زندگی گزار رہے ہیں جس کا ان کے کسی کلاس فیلو نے خواب تک نہیں دیکھا تھا‘ ہم سب لوگ زندگی میں ٹاپ کرنا چاہتے ہیں‘ ہم ہر کلاس میں اول آنا چاہتے ہیں‘ ہم بازار کا مہنگا ترین لباس خریدنا ....مزید پڑھئے‎