قانون اندھا ہو گیا، نہ گھر دیکھا نہ چار دیواری،رکھوالے یا بااثر شخصیات کے غلام، تھانیدار زبردستی گھر میں گھس گیا، میاں بیوی کی ٹھکائی

  اتوار‬‮ 27 ستمبر‬‮ 2020  |  20:33

قصور (آ ن لا ئن) تھانہ کھڈیاں کے تھانیدار نے زبردستی گھر میں گھس کر میاں بیوی کو زد و کوب کا نشانہ بنا ڈالا، چادر و چار دیواری کا تقدس پامال کرتے ہوئے گھر کے دروازے توڑ دئیے، با اثر شخصیا ت کے ڈیرہ پر لیجا کر بھی ذلیل و خوار کیااور اسلحہ کے زور پر قید کرنے کی دھمکیاں دیتے رہے،کھڈیا ں کے رہائشی پراپرٹی ڈٖیلر محمدارشد بھٹی نے اعلی حکام کو دی گئی درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ گزشتہ رات تھانہ کھڈیاں کے اے ایس آئی رشید، کانسٹیبل نوید، آصف کانسٹیبل نے چادر چار دیواری


کا تقدس پامال کرتے ہوئے گھر کے دروازے توڑ کر گھر میں داخل ہوکر مجھے اور میری بیوی کو زد و کوب کرنا شروع کر دیااور میری بیوی کے کپڑے پھاڑ دئیے، گاڑی میں بیٹھاکر ایک ڈیرہ پر لیجا کر بھی ذلیل و خوار کیا اور اسلحہ کے زور پر مارنے کی دھمکیاں دیتے رہے، پولیس نے دس ہزار روپے رشوت لیکر ہمیں چھوڑ دیا، محمدارشد بھٹی کے مطابق تھانہ میں معمولی درخواست میری سالی کے خلاف آئی تھی لیکن پولیس نے چادر و چار دیواری کا تقدس پامال کرتے ہوئے تشدد کا نشانہ بنایا، وزیر اعلی پنجاب،آئی جی پنجاب، ڈی آئی جی شیخوپورہ رینج، ڈی پی او قصور ودیگر اعلی حکام فوری نوٹس لیتے ہوئے اے ایس آئی رشید، کانسٹیبل نوید، آصف کانسٹیبل کے خلاف مقدمہ درج کرکے مجھے انصاف فراہم کیا جائے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

ڈائیلاگ اور صرف ڈائیلاگ

سینٹ ہونو رینا  فرانس کے علاقے نارمنڈی سے تعلق رکھتی تھیں‘ یہ کیتھولک نن تھیں‘ کنواری تھیں‘ نارمنڈی میںکیتھولک کا قتل عام شروع ہوا تو سینٹ ہونورینا کو بھی مار کر نعش دریائے سین میں پھینک دی گئی‘ یہ نعش بہتی بہتی کون فلوینس  پہنچ گئی‘ کون فلوینس پیرس سے 24 کلومیٹر کے فاصلے پر چھوٹا سا گاﺅں ....مزید پڑھئے‎

سینٹ ہونو رینا  فرانس کے علاقے نارمنڈی سے تعلق رکھتی تھیں‘ یہ کیتھولک نن تھیں‘ کنواری تھیں‘ نارمنڈی میںکیتھولک کا قتل عام شروع ہوا تو سینٹ ہونورینا کو بھی مار کر نعش دریائے سین میں پھینک دی گئی‘ یہ نعش بہتی بہتی کون فلوینس  پہنچ گئی‘ کون فلوینس پیرس سے 24 کلومیٹر کے فاصلے پر چھوٹا سا گاﺅں ....مزید پڑھئے‎