سفارش کلچر کا خاتمہ ، میرٹ کا بول بالا، سرکاری کالجز کے اساتذہ کے لئے ای ٹرانسفر سسٹم کا اجراء کر دیا گیا

  جمعہ‬‮ 14 اگست‬‮ 2020  |  0:47

لاہور( این این آئی)صوبائی وزیر ہائیرایجوکیشن راجہ یاسر ہمایوں نے سرکاری کالجز کے اساتذہ کے لئے ای ٹرانسفر سسٹم کا افتتاح کر دیا ہے،آن لائن سسٹم سے پنجاب کے 700کالجز کے 15ہزار اساتذہ مستفید ہو سکیں گے، نئی پالیسی سے نہ صرف سفارش کلچر کا خاتمہ ہو گا بلکہ میرٹ کا بول بالا ہو گا اور شفافیت کو فروغ ملے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ارفع کریم آئی ٹی ٹاور میں سرکاری کالجز کےاساتذہ کے تبادلوں کے حوالے سے محکمہ ہائیر ایجوکیشن پنجاب کی جانب سے پی آئی ٹی بی کے تعاون سے بنائے گئے ای ٹرانسفر سسٹم


کے افتتاح کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ تبادلے کے خواہشمند سرکاری کالجز کے اساتذہ ای ٹرانسفر سسٹم کے تحت 18اکتوبر سے درخواستیں جمع کروا سکیں گے۔ محکمہ ہائیر ایجوکیشن مخصوص ایپ پر تبادلے کے لیے موصول درخواستوں پر ایک ہفتہ میں جانچ پڑتال کے بعد میرٹ پر تبادلے کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں درخواست دہندہ کو ایک ٹریکنگ سسٹم کے تحت اس کی درخواست بارے مکمل آگاہ رکھا جاے گا۔صوبائی وزیر نے مزید بتایا کہ ای ٹرانسفر ایپ پر پنجاب بھر کے کالجز میں خالی سیٹوں کی تفصیلات موجود ہونگی۔اور اساتذہ گھر بیٹھے تبادلہ کی درخواست دے سکیں گے۔جس سے ان کے وقت اور پیسے کی بچت ہو گی اور سفارش کلچر کا مکمل خاتمہ ہو گا۔ اساتذہ ای ٹرانسفر ایپ کو گوگل پلے سٹور سے ڈاون لوڈ کر کے بغیر وقت ضائع کے تبادلہ کے لیے اپنی درخواست جمع کروا سکیں گے۔انہوں نے کہا کہ ای ٹرانسفر سسٹم کے تحت ایک شفاف طریقے سے میرٹ پر اساتذہ کا تبادلے ہونگے اور سرکاری معاملات میں شفافیت کو فروغ ملے گا۔ صوبائی وزیر ہائیرایجوکیشن راجہ یاسر ہمایوں نے سرکاری کالجز کے اساتذہ کے لئے ای ٹرانسفر سسٹم کا افتتاح کر دیا ہے


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

بالا مستری

ہم اگر حضرت عمر فاروقؓ کی شخصیت کو دو لفظوں میں بیان کرنا چاہیں تو ”عدل فاروقی“ لکھ دینا کافی ہو گا‘ حضرت عمرؓ انصاف کے معاملے میں انقلابی تھے‘ یہ عدل کرتے وقت شریعت سے بھی گنجائش نکال لیتے تھے مثلاً حجاز اور شام میں قحط پڑا‘ لوگوں نے بھوک سے تنگ آ کر خوراک چوری کرنا ....مزید پڑھئے‎

ہم اگر حضرت عمر فاروقؓ کی شخصیت کو دو لفظوں میں بیان کرنا چاہیں تو ”عدل فاروقی“ لکھ دینا کافی ہو گا‘ حضرت عمرؓ انصاف کے معاملے میں انقلابی تھے‘ یہ عدل کرتے وقت شریعت سے بھی گنجائش نکال لیتے تھے مثلاً حجاز اور شام میں قحط پڑا‘ لوگوں نے بھوک سے تنگ آ کر خوراک چوری کرنا ....مزید پڑھئے‎