فیصل واوڈا کی دہری شہریت پر سپریم کورٹ کو نوٹس نہیں لینا چاہیے؟ الیکشن کمیشن کیوں کچھ نہیں کررہا؟نوکروں کے نام بے نامی جائیداد رکھی ہوئی ہے، لیگی رہنما رانا ثنا اللہ نے دھماکہ خیز اعلان کر دیا 

  جمعہ‬‮ 3 جولائی‬‮ 2020  |  23:05

اسلام آباد (این این آئی)پاکستان مسلم لیگ (ن) پنجاب کے صدر رانا ثنا ء اللہ نے کہا ہے کہ وفاقی وزیر فیصل واوڈا کی دہری شہریت کے معاملے پر الیکشن کمیشن کیوں کچھ نہیں کررہا؟ایک انٹرویومیں انہوںنے کہاکہ موجودہ وزیر پر الزام ہے کہ نوکروں کے نام بے نامی جائیداد رکھی ہوئی ہے، وزیر صاحب کی باہر بھی جائیدادیں ہیں، ایسٹ ریکوری یونٹ کیا کررہا ہے؟ انہوں نے کہا کہ ایسٹ ریکوری یونٹ صرف اپوزیشن کی فائلیں لے کر بیٹھا ہوا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ(ن) لیگ کے دو سینیٹرز کو صرف اس بنیاد پر نااہل کیا گیا کہ جس


وقت انہوں نے اپنے کاغذات نامزدگی جمع کرائے، اس وقت وہ دہری شہریت کے حامل تھے۔انہوں نے سوال اٹھایا کہ کیا فیصل واوڈا کی دہری شہریت پر سپریم کورٹ کو نوٹس نہیں لینا چاہیے؟ الیکشن کمیشن کیوں کچھ نہیں کررہا؟  الیکشن کمیشن کو فیصل واوڈا پر دہری شہریت کے الزام کا نوٹس لینا چاہیے۔لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ ہم سے تو 20، 20 سال پرانے بجلی اور گیس کے بل کا سوال کیا جارہا ہے۔


موضوعات: