اوسلو میں پی آئی اے کی فلائیٹ تاخیر کا شکار، انتہائی حیرت انگیز وجہ سامنے آ گئی، مسافر انتظامیہ پر پھٹ پڑے

  ہفتہ‬‮ 23 مئی‬‮‬‮ 2020  |  23:59

اوسلو ( آن لائن ) ناروے کے دارلحکومت اوسلو میں پی آئی اے جہاز میں تیل کی لیکج کے باعث فلائیٹ تاخیر کا شکار ہو گئی ، مسافر انتظامیہ پر پھٹ پڑے۔ تفصیلات کے مطاق اوسلو سے لاہو کے لئے سفرکرنے والے ایک آصف محمود نامی شہری کی جانب سے ویڈیو بنائی گئی جس میں اس نے بتایا کہ فلائیٹ نے شام 4 بجے پرواز بھرنا تھی تاہم تکنیکی خرابی کے باعث فلائیٹ کو 2 گھنٹے لیٹ کر دیا گیاجس کے بعد تمام مسافر 6 بجے ایئر پورٹ پر پہنچ گئے۔ایئر پورٹ پر پہنچنے کے بعد معلوم ہوا کہ فلائیٹ


6 گھنٹے مزید تاخیر کا شکار ہو گئی ہے۔ جس کے باعث اوسلو کے ایئر پورٹ پر موجود افراد کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ رات 12 بجے خراب جہاز کو اوسلو میں لینڈ کر دیا گیا اور پھر یہ کہہ کر پرواز کو مزید تاخیر کی کہ جہاز میں آئل لیکج ہے۔شہری آصف محمود نے الزام عائد کیا کہ رات 2 بجے تک بھی فلائیٹ نہ چلائی گئی۔طیارے کا انتظار کرتے ایک مسافر ارشد چودھری نے کہا کہ یہاں پر پانی تک مہیا نہیں کیا گیا۔ مسافروں کی جانب سے مطالبہ کیا گیا کہ انتظامیہ کیخلاف کارروائی کی جائے۔ سٹاف کا کوئی رکن یہاں پر نظر نہیں آرہا ، ہمیں بے یار ومددگار چھوڑ دیا گیا۔ فلائیٹ کا انتظار کرتے مسافروں کا کہنا تھا کہ 10 سے 12 گھنٹے ہو چکے ہیں جہاز کا انتظار کررہے ہیں تاہم انتظامیہ لاپرواہی کا مظاہرہ کر رہی ہے۔ کوئی تعاون نہیں کر رہی۔ ویڈیو میں مسافر کی جانب سے ہیلپ ڈیسک دیکھا گیا جہاں پی آئی اے کاکوئی عملہ موجود نہ تھا۔ یہ بات بھی قابل غور رہے کہ گزشتہ روز پی آئی اے کا مسافر طیارہ کراچی میں گر کر تباہ ہو گیا تھا جس میں 97 افراد جاں بحق ہو گئے تھے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

“Be Kind To Yourself”

سکواڈرن لیڈر محمد اقبال ائیرفورس کے ریٹائر افسر ہیں‘ جسمانی عمر 73 برس ہے لیکن جذباتی 30 سال سے اوپر نہیں گئی‘ بچے بڑے ہیں اور مطمئن زندگی گزار رہے ہیں‘ اہلیہ کا انتقال ہو چکا ہے‘ یہ انہیں بہت مس کرتے ہیں‘ تین چار سو لطیفے یاد ہیں‘ جہاں کھڑے ہوتے ہیں وہاں چند منٹوں میں قہقہے ....مزید پڑھئے‎

سکواڈرن لیڈر محمد اقبال ائیرفورس کے ریٹائر افسر ہیں‘ جسمانی عمر 73 برس ہے لیکن جذباتی 30 سال سے اوپر نہیں گئی‘ بچے بڑے ہیں اور مطمئن زندگی گزار رہے ہیں‘ اہلیہ کا انتقال ہو چکا ہے‘ یہ انہیں بہت مس کرتے ہیں‘ تین چار سو لطیفے یاد ہیں‘ جہاں کھڑے ہوتے ہیں وہاں چند منٹوں میں قہقہے ....مزید پڑھئے‎