بیگم شمیم اختر کی تدفین پاکستان میں کی جائیگی نوازشریف جسد خاکی کے ہمراہ پاکستان آئینگے یا نہیں؟ لندن سے تازہ ترین تفصیلات آگئیں

  اتوار‬‮ 22 ‬‮نومبر‬‮ 2020  |  15:29

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)سابق وزیراعظم نوازشریف اور سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہبازشریف کی والدہ بیگم شمیم اختر 90برس کی عمر میں لند ن میں انتقال کر گئیں ۔نجی ٹی وی جیو نیوزکے مطابق بیگم شمیم اختر اس وقت لندن میں ہی نوازشریف کے ساتھ مقیم تھیں لیکن ابوہ انتقال کر گئی ہیں ۔ نوازشریف کی والدہ 15 فروری کو لندن گئی تھیں اور ان کا علاج بھی کافی عرصہ سے وہیں چل رہا تھا ۔ مسلم لیگ ن کے رہنما عطا تارڑ کی جانب سے نواز شریف کی والد ہ کے انتقال کی خبر جاری کی گئی ۔عطا اللہ تارڈنے جیونیوز


سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ بیگم شمیم اختر کافی عرصے سے بیمار تھیں ، ان کا انتقال ایون فیلڈ اپارٹمنٹس میں ہی ہوا، ابھی میری سلمان شہباز سے ٹیلیفونک گفتگو ہوئی ہے ، انہوں نے اس کی تصدیق کی ۔ سلمان شہبازکے مطابق ان کی دادی کا جسد خاکی پاکستان پہنچانے کے انتظامات کئے جارہے ہیں، کوٹ لکھپت جیل میں قید شہبازشریف اور انکے بیٹے حمزہ شہبا زکی پیرول پر رہائی کیلئے کوششیں شروع کردی گئی ہیں،ذرائع کے مطابق بیگم شمیم اختر کی نماز جنازہ لندن میں ہی ادا کی جائیگی اور تدفین کیلئے جسد خاکی پہلی دستیاب فلائٹ سے پاکستان روانہ کردیا جائیگا، سابق وزیر اعظم نوازشریف کی پاکستان آمد کا امکان نہیں ۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

بڑے چودھری صاحب

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎