شادی تقریب میں بیٹے کیلئے دلہن تلاش کرنے والی خاتون کی دھوم ویڈیوسوشل میڈیاپر وائرل

  منگل‬‮ 17 ‬‮نومبر‬‮ 2020  |  17:34

قاہرہ (این این آئی )مصر میں سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ایک ویڈیو لاکھوں لوگوں کی توجہ کا مرکز بن گئی۔ اس ویڈیو میں ایک خاتون کو اپنے جواں سال بیٹے کے لیے ایک شادی کی تقریب میں شریکہ حیات کا انتخاب کرتے دکھایا گیا ہے۔عرب ٹی وی کے مابق یہ ویڈیو مصری خواتین بالخصوص مائوں کیاپنے بیٹوں کے لیے رشتوں کی تلاش، ان کے انتخاب کے پسندیدہ طریقے اور لڑکیوں کی خوبیوں کی جان کاری کی خصوصیات کا پتا چلتا ہے۔مصر کے 28 سالہ عمرو خلیل عزیزو اقارب، جاننے والوں اور دوستوں کی شادی بیاہ کی تقریبات میں


اپنے ماں احلام محمد عبدالعزیز کے ہمراہ ہوتا ہے۔ احلام کے شوہر انتقال کرچکے ہیں جبکہ اس کے پانچ بیٹے اور دو بیٹیاں ہیں۔ اس کے چار بیٹوں اور دو بیٹیوں کی شادیاں ہوچکی ہیں۔ صرف عمرو خلیل کی شادی ہونا باقی ہے۔عمرو نے بتایا کہ حال ہی میں وہ ایک عزیز کی شادی کی تقریب میں شریک تھے کہ انہوںنے اپنی ماں کی ویڈیو بنائی۔ وہ شادی کی تقریب شریک لڑکیوں پرنظریں جمائے ہوئے ہیں اور ان میں سے اپنے بیٹے کیلیے دلہن تلاش کررہی ہیں۔اگرچہ اس وقت احلام کو معلوم نہیں تھا کہ اس کا بیٹا اس کی ویڈیو بنا رہا ہے تاہم بعد ازاں اسے معلوم ہوا کہ شادی کی تقریب میں بیٹے کے لیے دلہن کی تلاش کا منظر سوشل میڈیا پر اتنا زیادہ مقبول ہو گیا ہے۔احلام محمد عبدالعزیز نے بتایا کہ عمرو اس کا سب سے چھوٹا بیٹا ہے۔ میں چاہتی ہوںکہ وہ بھی اپنے دوسرے بھائیوں کی طرح اپنا گھر بسائے۔ اس کے لیے میںنے ایک شادی میں اس کی دلہن دیکھی۔اس کے بعد اس کے اہل خانہ سے بات کی اور منگنی طے ہوگئی ہے۔ اس کا کہنا تھا کہ شادی کی تقریب میں بیٹے کے لیے دلہن کی تلاش کی ویڈیو کو بے پناہ مقبولیت ناقابل یقین ہے۔


زیرو پوائنٹ

براڈ شیٹ

شریف الدین پیرزادہ عرف عام میں جدہ کے جادوگر کہلاتے تھے‘ یہ ملک کے واحد قانون دان تھے جو قانون سے ہر قسم کی گنجائش نکال لیتے تھے چناں چہ ایوب خان سے لے کر جنرل پرویز مشرف تک یہ ملک کے ہر آمر کے دست راست رہے‘ جنرل ضیاء الحق مرشد جب کہ جنرل پرویز مشرف انہیں ....مزید پڑھئے‎

شریف الدین پیرزادہ عرف عام میں جدہ کے جادوگر کہلاتے تھے‘ یہ ملک کے واحد قانون دان تھے جو قانون سے ہر قسم کی گنجائش نکال لیتے تھے چناں چہ ایوب خان سے لے کر جنرل پرویز مشرف تک یہ ملک کے ہر آمر کے دست راست رہے‘ جنرل ضیاء الحق مرشد جب کہ جنرل پرویز مشرف انہیں ....مزید پڑھئے‎