قطر کا فیفا ورلڈ کپ کیلئے خریدی گئی ہزاروں بسیں عطیہ کرنے کا فیصلہ

29  دسمبر‬‮  2022

اسلام ڈیسک( مانیٹرنگ ڈیسک ) قطر نے فیفا ورلڈ کپ کیلئے خریدی گئی بسیں عطیہ کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ گلف نیوز کے مطابق لبنانی میڈیا نے رپورٹ کیا ہے کہ قطر ورلڈ کپ کے دوران شائقین کی نقل و حمل کے لیے استعمال ہونے والی بسیں لبنان کو عطیہ کرے گا تاکہ ملک کے ٹرانسپورٹ سیکٹر کی مدد کی جا سکے۔

اس مقصد کے لیے لبنان کے وزیراعظم نجیب میقاتی نے ورلڈ کپ کے موقع پر قطری حکام سے اس معاملے پر بات چیت کی، جنہیں یہ خیال دوحہ کی جانب سے ترقی پذیر ممالک کو ورلڈ کپ سے متعلق کچھ بنیادی ڈھانچہ عطیہ کرنے کی خواہش سے متاثر ہوکر آیا۔بتایا گیا ہے کہ قطریوں نے بیروت میں کھیلوں کے شہر اور بعض میونسپل سٹیڈیمز کے لیے موزوں نشستیں فراہم کرنے کی پیشکش کی تاہم لبنانی فریق نے لبنان کو بسیں فراہم کرنے کی خواہش کا اظہار کیا، میقاتی نے قطر کے وزیر خارجہ محمد بن عبدالرحمن بن جاسم الثانی کے ساتھ اس پر بات چیت کی، جو لبنان سمیت کچھ ممالک کے ساتھ سیاسی تعلقات کے علاوہ قطر کے لیے بیرونی سرمایہ کاری فنڈ کا انتظام کرتے ہیں ۔معلوم ہوا ہے کہ قطرنے تقریباً3,000 بسیں خریدی ہیں، اس کے علاوہ اس کے پاس پہلے سے موجود 1000 بسیں بھی ہیں، جو ایونٹ کے دوران شائقین کو مفت لے جانے کے لیے استعمال کی گئیں، اگرچہ قوانین اس طرح کے قدم کی اجازت دیتے ہیں لیکن اس معاملے کو نجی کمپنیوں کے ساتھ طے کرنے کی ضرورت ہو سکتی ہے جو نجی ٹرانسپورٹ سیکٹر میں کارکنوں کے ذریعہ استعمال ہونے والی ان گاڑیوں کی مالک ہیں۔

موضوعات:



کالم



ہم بھی کیا لوگ ہیں؟


حافظ صاحب میرے بزرگ دوست ہیں‘ میں انہیں 1995ء سے…

مرحوم نذیر ناجی(آخری حصہ)

ہمارے سیاست دان کا سب سے بڑا المیہ ہے یہ اہلیت…

مرحوم نذیر ناجی

نذیر ناجی صاحب کے ساتھ میرا چار ملاقاتوں اور…

گوہر اعجاز اور محسن نقوی

میں یہاں گوہر اعجاز اور محسن نقوی کی کیس سٹڈیز…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے (آخری حصہ)

میاں نواز شریف کانگریس کی مثال لیں‘ یہ دنیا کی…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے

بودھ مت کے قدیم لٹریچر کے مطابق مہاتما بودھ نے…

جنرل باجوہ سے مولانا کی ملاقاتیں

میری پچھلے سال جنرل قمر جاوید باجوہ سے متعدد…

گنڈا پور جیسی توپ

ہم تھوڑی دیر کے لیے جنوری 2022ء میں واپس چلے جاتے…

اب ہار مان لیں

خواجہ سعد رفیق دو نسلوں سے سیاست دان ہیں‘ ان…

خودکش حملہ آور

وہ شہری یونیورسٹی تھی اور ایم اے ماس کمیونی کیشن…

برداشت

بات بہت معمولی تھی‘ میں نے انہیں پانچ بجے کا…