سابق ورلڈ چیمپئن 45رنز پر ڈھیر، جانتے ہیں کتنے سال پرانا ریکارڈ اپنے نام کرلیا؟

  ہفتہ‬‮ 9 مارچ‬‮ 2019  |  17:06

سینٹ کٹس(آن لائن)ٹی ٹونٹی ورلڈ چیمپئن ویسٹ انڈیز نے دوسرے ٹی ٹونٹی مقابلے میں انگلینڈ کے خلاف بڑے مارجن سے ہارنے کے ساتھ ساتھ کرکٹ کی 142سالہ تاریخ کا بدترین ریکارڈ بھی اپنے نام کرلیا ہے۔وارنر پارک ،سینٹ کٹس میں ویسٹ انڈین کپتان جیسن ہولڈر نے ٹاس جیت پر پہلے بالنگ کرنے کا فیصلہ کیا ۔انگلش ٹیم کا آغاز زیادہ اچھا نہیں رہا اور32رنز پر اس کی 4وکٹیں گر چکی تھیں،ایلکس ہیلز8،وکٹ کیپر جونی بیئر سٹو12،کپتان این مورگن 1اور جو ڈینلی2رنز بنا کر پوویلین لوٹے،جو روٹ اورسیم بلنگز نے پانچویں وکٹ کے لیے82رنز کا اضافہ کیا اور اس دوران جو


روٹ نے اپنے ٹی ٹونٹی کیریئر کی5ویں نصف سنچری بھی مکمل کی ،روٹ40گیندوں پر7چوکوں کی مدد سے55رنز بنا کررن آٹ ہوئے،سیم بنلگز نے اپنی دوسری ٹی ٹونٹی نصف سنچری سکور کرنے کے ساتھ ساتھ ڈیوڈ ویلی کے ساتھ ملکر چھٹی وکٹ کے لیے68رنز جوڑے،وہ اننگز کی آخری گیند پر87رنز بناکر آٹ ہوئے،انگلینڈ نے مقررہ20اوور ز میں6وکٹوں پر182رنز بنائے۔انگلش باؤلرز نے ویسٹ انڈین بلے بازوں کو تباہ برباد کرڈالااورشیمرون ہیٹمائر اور کارلوس براتھ ویٹ کے10،10رنز کے علاوہ اور کوئی ویسٹ انڈین بلے باز ڈبل فگرز میں بھی نہ پہنچ سکا،گیل5،شائی ہوپ7،ڈیرن براوو0،جیسن ہولڈر0،نکولس پوران1،فابیئن ایلن1،دوندرا بشو8اورشیلڈن کوٹریل2رنز بنا کر آئوٹ ہوئے اور ویسٹ انڈیزکی پوری ٹیم محض11.5اوورز میں45رنز بنا کر پویلین لوٹ گئی ،کرکٹ کی 142سالہ تاریخ میں یہ کسی بھی ٹیسٹ پلیئنگ ٹیم کی جانب سے کھیلے گئے اوورز کی کم ترین تعداد ہے ، انگلینڈ کے لیے جورڈن نے4، عادل رشید،لیام پلنکٹ اور ڈیوڈ ویلی نے 2،2وکٹیں لیں۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

ہم اپنے بچوں کے قاتل ہیں

میرے بیٹے نے چند دن پہلے مجھ سے ایک عجیب سوال کیا‘ اس نے پوچھا ’’آپ نے کبھی سوچا آپ کے بچے آپ کی عزت کیوں کرتے ہیں‘‘ میں نے قہقہہ لگا کر جواب دیا ’’دنیا کے تمام بچے اپنے والدین کی عزت کرتے ہیں‘ میں باپ ہوں اور باپ کی حیثیت سے مجھے عزت کی سہولت (Privilege) حاصل ہے‘‘ ....مزید پڑھئے‎

میرے بیٹے نے چند دن پہلے مجھ سے ایک عجیب سوال کیا‘ اس نے پوچھا ’’آپ نے کبھی سوچا آپ کے بچے آپ کی عزت کیوں کرتے ہیں‘‘ میں نے قہقہہ لگا کر جواب دیا ’’دنیا کے تمام بچے اپنے والدین کی عزت کرتے ہیں‘ میں باپ ہوں اور باپ کی حیثیت سے مجھے عزت کی سہولت (Privilege) حاصل ہے‘‘ ....مزید پڑھئے‎