وزیراعظم کے اعتماد کے ووٹ کا معاملہ،اپوزیشن نے حکمت عملی کو حتمی شکل دے دی، تہلکہ خیز فیصلہ

  جمعہ‬‮ 5 مارچ‬‮ 2021  |  18:11

اسلام آباد (این این آئی)وزیراعظم کے اعتماد کے ووٹ کے معاملے پر اپوزیشن نے حکمت عملی کو حتمی شکل دیدی ہے۔ ذرائع کے مطابق پاکستان مسلم لیگ (ن) کی رہنماء مریم نواز اور چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے ملاقات کی جس میں وزیراعظم کے اعتماد کے ووٹ لینے کے معاملے پرمشاورت کی گئی اور حکمتعملی کو حتمی شکل دی گئی۔ملاقات میں فیصلہ کیا گیا کہ اپوزیشن ہفتے کو بلائے گئے اسمبلی اجلاس میں بھرپور شرکت کریگی۔ذرائع کے مطابق اپوزیشن اراکین کو ہدایت کی گئی ہے کہ ہرصورت پارلیمنٹ ہاؤس پہنچیں۔ زرائع کے مطابق اپوزیشن قومی اسمبلی اجلاس


میں بھرپور احتجاج کریگی،اجلاس میں اپوزیشن لیڈرز نکتہ اعتراض پر بات کرنے کی بھی کوشش کریں گے۔ ذرائع کے مطابق سپیکر کی طرف سے اجازت نہ دیئے جانے کی صورت میں احتجاج بھی کیا جائے گا، ذرائع کے مطابق اسیر ان کے پروڈکشن آرڈر جاری نہ کئے جانے کا معاملہ بھرپور انداز میں اٹھایا جائے گا۔ اجلاس میں سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے رویہ پر بھی احتجاج کیا جائے گا۔ذرائع کے مطابق اپوزیشن کی طرف سے وزیراعظم عمران خان کو بھرپور تنقید کا نشانہ بنایا جائے گا اوراعتماد کی تحریک پر ووٹنگ کے وقت abstain کیا جائے گاجبکہ اپوزیشن نے ووٹنگ کے عمل میں حصہ نہ لینے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔ وزیراعظم کے اعتماد کے ووٹ کے معاملے پر اپوزیشن نے حکمت عملی کو حتمی شکل دیدی ہے۔ ذرائع کے مطابق پاکستان مسلم لیگ (ن) کی رہنماء مریم نواز اور چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے ملاقات کی جس میں وزیراعظم کے اعتماد کے ووٹ لینے کے معاملے پرمشاورت کی گئی اور حکمت عملی کو حتمی شکل دی گئی۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

اللہ ہی رحم کرے

مغل بادشاہ شاہ جہاں کے پاس ایک ترک غلام تھا‘ وہ بادشاہ کو پانی پلانے پر تعینات تھا‘ سارا دن پیالہ اور صراحی اٹھا کر تخت کے پاس کھڑا رہتا تھا‘ بادشاہ اس کی طرف دیکھتا تھا تو وہ فوراً پیالہ بھر کرپیش کر دیتا تھا‘ وہ برسوں سے یہ ڈیوٹی سرانجام دے رہا تھا اور بڑی حد تک بادشاہ ....مزید پڑھئے‎

مغل بادشاہ شاہ جہاں کے پاس ایک ترک غلام تھا‘ وہ بادشاہ کو پانی پلانے پر تعینات تھا‘ سارا دن پیالہ اور صراحی اٹھا کر تخت کے پاس کھڑا رہتا تھا‘ بادشاہ اس کی طرف دیکھتا تھا تو وہ فوراً پیالہ بھر کرپیش کر دیتا تھا‘ وہ برسوں سے یہ ڈیوٹی سرانجام دے رہا تھا اور بڑی حد تک بادشاہ ....مزید پڑھئے‎