وزیراعظم اعتماد کا ووٹ حاصل نہ کر سکے تو۔۔۔ شیخ رشید نے عمران خان کیلئے خطرے کی گھنٹی بجادی

  جمعرات‬‮ 4 مارچ‬‮ 2021  |  10:27

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک، این این آئی )وفاقی وزیر داخلہ نے کہاکہ اتحادیوں نے یقین دہانی کرائی ہے کہ وزیراعظم کا ساتھ دیں گے ،نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وزیراعظم اگراعتمادکاووٹ حاصل نہ کر سکے تو حکومت ختم ہو جائے گی، ان کاکہناتھاکہ قانون کے مطابق اسمبلی سے اعتمادکا ووٹ لینے کے بعد 6 مہینے تک عدم اعتمادکی تحریک نہیں آ سکتی، اتحادی عمران خان کو اعتماد کا ووٹ دیں گے ، دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ میں بزدل نہیں مقابلہ کرنا جانتا ہوں، اقتدار کی خاطر خاموش ہو کر نہیں


بیٹھوں گا، عہدے کے لیے اپنا مقصد نہیں بدل سکتا۔ جمعرات کو وزیر اعظم عمران خان کی زیرصدارت حکومتی رہنماوں کا اجلاس ہوا، جس میں وفاقی کابینہ ارکان اور نومنتخب سینیٹرز بھی شریک ہوئے، چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے اجلاس میں خصوصی شرکت کی۔اجلاس میں چیئرمین سینیٹ کے انتخاب کی حکمت عملی پر غور کیا گیا، اور وزیراعظم عمران خان نے صادق سنجرانی پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ چیئرمین سینٹ کے انتخاب میں ہمارے امیدوار ہوں گے۔وزیراعظم نے کہاکہ میں بزدل نہیں مقابلہ کرنا جانتا ہوں، اقتدار کی خاطر خاموش ہو کر نہیں بیٹھوں گا، عہدے کے لیے اپنا مقصد نہیں بدل سکتا، بوسیدہ نظام کی تبدیلی میرا مشن ہے، اپوزیشن کی پیسہ کی سیاست کو بے نقاب کرتا رہوں گا۔عمران خان نے کہا کہ ملک میں نظامکی تبدیلی کا مشن لے کر آیا ہوں موقف سے پیچھے نہیں ہٹوں گا، میں اگر نظریہ پر سمجھوتا کر لوں حکومت کرنا آسان ہو جائے، اداروں کی مضبوطی اور شفافیت یقینی بنانے کیلئے جدوجہد جاری رہے گی۔دریں اثنا وزیراعظم نے اپنا ایک ویڈیو بیان میں جاری کیا ہے جس میںان کا کہنا تھا کہ مجھے اگر کوئی حکومت جانے کی خبریں دے کر بلیک میل کرنے کی کوشش کرے تو میں پھر بھی ان چوروں اور ڈاکوؤں کو نہیں چھوڑوں گا چاہے میری جان بھی چلی جائے، یہ میرا اپنی قوم سے وعدہ ہے۔وزیراعظم نے فرط جذبات میں کہا کہ میں نے اللہ سے دعا کیتھی کہ یااللہ مجھے ایک موقع دے، جنہوں نے میرے ملک کے ساتھ یہ سلوک کیا ہے میں انہیں کسی صورت بھی نہیں چھوڑوں گا، یہ لوگ چاہے جتنا شور مچالیں۔عمران خان نے کہا کہ یہ لوگ مجھے جلسوں اور اسمبلیوں میں گالیاں دے رہے ہیں لیکن مجھے کوئی فرق نہیں پڑتا، کیوں کہ میںوہ شخص ہوں جو ایک لاکھ مخالفین کے سامنے میدان میں اترتا تھا اور وہ سب مجھے برا بھلا کہتے تھے، اپوزیشن کے لوگ تو بہت کم ہیں، میں واضح طور پر بتادوں کہ جس جس نے میرے ملک کو نقصان پہنچایا ان میں سے ایک کو بھی نہیں چھوڑوں گا۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

راﺅنڈ اباﺅٹ

اندر کمار گجرال بھارت کے 12 ویں وزیراعظم تھے‘ یہ 1997ءاور 1998ءکے درمیان ایک سال وزیراعظم رہے‘ اٹل بہاری واجپائی ان کے بعد وزیراعظم بنے تھے‘ گجرال جہلم میں پیدا ہوئے تھے‘ ان کی ساری تعلیم جہلم اور لاہور کی تھی اور یہ دل سے پاکستان اور بھارت کے تعلقات بہتر دیکھنا چاہتے تھے‘ میاں نواز شریف کے ....مزید پڑھئے‎

اندر کمار گجرال بھارت کے 12 ویں وزیراعظم تھے‘ یہ 1997ءاور 1998ءکے درمیان ایک سال وزیراعظم رہے‘ اٹل بہاری واجپائی ان کے بعد وزیراعظم بنے تھے‘ گجرال جہلم میں پیدا ہوئے تھے‘ ان کی ساری تعلیم جہلم اور لاہور کی تھی اور یہ دل سے پاکستان اور بھارت کے تعلقات بہتر دیکھنا چاہتے تھے‘ میاں نواز شریف کے ....مزید پڑھئے‎