حکومت نواز شریف کو پھنسانے چلی تھی براڈ شیٹ ان کے گلے پڑ گئی ، مریم نواز کا طنز،چچا کی پیشی پر کھل کر بول پڑیں

  ہفتہ‬‮ 16 جنوری‬‮ 2021  |  15:04

لاہور (آن لائن )مسلم لیگ (ن ) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ حکومت نواز شریف کو پھنسانے کے چکر میں تھی مگر براڈ شیٹ ان کے اپنے گلے میں پڑ گیا،براڈ شٹ سے پیسے مانگ کر یہ پتا چل گیا کہ یہ کتنے کرپٹ، نااہل اور چور ہیں، وزیراعظم جس سے خطرہ محسوس کرتے ہیںاسے جیل بھیج دیتے ہیں، عمران خان شہباز شریف سے بھی خوفزدہ ہیں،پی ڈی ایم عوام کی آواز ہے، حکومت کے ہاتھ پاؤں اور سانسیں پھولی ہوئی ہیں۔ ۔لاہور میں احتساب عدالت کے باہر مسلم لیگ (ن ) کے صدر شہباز شریف


سے ملاقات کے بعد مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مخالفین نے قومی خزانہ بھی برباد کیا مگر نکلا کچھ نہیں، نواز شریف کو بے گناہی مل گئی، براڈ شیٹ سے پیسے مانگ کر یہ پتا چل گیا کہ یہ کتنے کرپٹ، نااہل اور چور ہیں، شہباز شریف اور حمزہ جلد باہر آئیں گے، پی ڈی ایم عوام کی آواز ہے، حکومت کے ہاتھ پاؤں اور سانسیں پھولی ہوئی ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ یہ احتساب نہیں انتقام ہے، ایک دن یہ تمام کیسز ختم ہوں گے اور ہم سرخرو ہوں گے، ضمنی انتخابات میں جیتیں گے، 19 جنوری کو الیکشن کمیشن کے سامنے بھرپور احتجاج ہوگا ان لوگوں نے لاہور کو کچرے کا ڈھیر بنا دیا ہے یہ لاہور والوں کو ووٹ نہ دینے کی سزا دے رہے ہیں ۔قبل ازیں مریم نواز نے لاہور کی احتساب عدالت میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف سے ملاقات کی، جس میں انہوں نے لیگی صدر کو پی ڈی ایم کے فیصلوں سے متعلق آگاہ کیا۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

نپولین فالٹ

نپولین بونا پارٹ 18 جون 1815ء کو واٹر لو میں آخری جنگ ہار گیا‘ فرانس کے عروج کا سورج ڈھل گیاتاہم نپولین گرتے گرتے برطانیہ کے تمام توسیع پسندانہ خواب چکنا چور کر گیا‘ انگریزوں کی ایسٹ انڈیا جیسی کمپنیاں دنیا کے درجنوں خطے ہڑپ کر چکی تھیں‘ بادشاہ کا خیال تھا یہ کام یابیاں انیسویں صدی کے آخر تک ....مزید پڑھئے‎

نپولین بونا پارٹ 18 جون 1815ء کو واٹر لو میں آخری جنگ ہار گیا‘ فرانس کے عروج کا سورج ڈھل گیاتاہم نپولین گرتے گرتے برطانیہ کے تمام توسیع پسندانہ خواب چکنا چور کر گیا‘ انگریزوں کی ایسٹ انڈیا جیسی کمپنیاں دنیا کے درجنوں خطے ہڑپ کر چکی تھیں‘ بادشاہ کا خیال تھا یہ کام یابیاں انیسویں صدی کے آخر تک ....مزید پڑھئے‎