اہم گرفتاری کے لئے بنی گالہ میں ریڈ، وزیر داخلہ نے بڑا حکم دے دیا

  جمعہ‬‮ 12 اگست‬‮ 2022  |  20:40

اسلام آباد (این این آئی)وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے سعودی عرب (مکہ) سے آئی جی اسلام آباد ڈاکٹراکبر ناصر خان سے ٹیلیفون پررابطہ کر کے آئی جی اسلام آباد سے شہباز گل کیس سے متعلق تفصیلات حاصل کیں۔ ذرائع کے مطابق وزیر داخلہ نے آئی جی اسلام آباد

کو شہباز گل کے ڈرائیور کی گرفتاری کیلئے بنی گالا ریڈ کرنے سے روک دیا۔ ذرائع کے مطابق شہباز گل کے ڈرائیور کی بیوی کی گرفتاری پر بھی آئی جی اسلام آباد سے اظہار ناراضگی کیا۔ وزیر داخلہ نے کہاکہ شہباز گل کا ڈرائیور بنی گالا میں روپوش ہے۔گرفتاری کیلئے بنی گالا ریڈ کرنے کی ضرورت ہے۔ ذرائع کے مطابق وزیر داخلہ نے کہاکہ بنی گالا کے مکینوں سے گفتگوکے ذریعے ملزم ڈرائیور کی حوالگی سے متعلق معاملہ حل کیا جائے۔ انہوں نے آئی جی کو ہدایت کی کہ عدم تعاون کی صورت میں مجھے آگاہ کیا جائے،بنی گالا ریڈ کرنے سے پہلے اجازت لی جائے۔ انہوں نے کہاکہ شہباز گل کالیب ٹاپ اور موبائل فون برآمد کرنے کیلئے اسکے ڈرائیور کو ہرصورت گرفتار کیا جائے۔ وزیر داخلہ نے کہاکہ دوران گرفتاری چادراور چار دیواری کا مکمل خیال رکھا جائے۔ انہوں نے کہاکہ ڈرائیورگرفتاری اورشہباز گل کے مقدمے میں شواہد اکٹھا کرنے کے عمل کے دوران قانون کی مکمل پاسداری کی جائے۔وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے شہباز گل کے ڈرائیور کی بیوی کو اسکے بچے سمیت گرفتار کرنے بھی پر آئی جی اسلام آباد سے اظہارناراضگی کیا۔ انہوں نے کہاکہ گھریلو خواتین کو گرفتار کرنا ہماری حکومت یا مسلم لیگ (ن) کی پالیسی اور روایت نہیں۔ انہوں نے کہاکہ ایسے کسی بھی عمل کی حوصلہ افزائی نہیں کی جاسکتی۔



موضوعات:

زیرو پوائنٹ

ہم کوئلے سے پٹرول کیوں نہیں بناتے؟

پروفیسر اطہر محبوب اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے وائس چانسلر ہیں‘ یہ چند دن قبل اسلام آباد آئے‘ مجھے عزت بخشی اور میرے گھر بھی تشریف لائے‘ یہ میری ان سے دوسری ملاقات تھی‘ پروفیسر صاحب پڑھے لکھے اور انتہائی سلجھے ہوئے خاندانی انسان ہیں‘ مجھے مدت بعد سلجھی اور علمی گفتگو سننے کا موقع ملا اور میں ابھی تک اس ....مزید پڑھئے‎

پروفیسر اطہر محبوب اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے وائس چانسلر ہیں‘ یہ چند دن قبل اسلام آباد آئے‘ مجھے عزت بخشی اور میرے گھر بھی تشریف لائے‘ یہ میری ان سے دوسری ملاقات تھی‘ پروفیسر صاحب پڑھے لکھے اور انتہائی سلجھے ہوئے خاندانی انسان ہیں‘ مجھے مدت بعد سلجھی اور علمی گفتگو سننے کا موقع ملا اور میں ابھی تک اس ....مزید پڑھئے‎