ٹریفک لائسنسنگ کے لئے نئی پالیسی جاری

  بدھ‬‮ 22 ستمبر‬‮ 2021  |  16:31

مکوآنہ (این این آئی )کرپشن کی شکایات پر لائسنسنگ سینٹرز اور ٹریفک لائنز کے عملے کو ہر چھ ماہ بعد تبدیل کرنے کا فیصلہ،ڈی ائی جی ٹریفک نے ایس او پیز جاری کر دیے۔تفصیلات کیمطابق ٹریفک لائسنسنگ سینٹرز میں کرپشن کے خاتمے کے لئے نئی پالیسی جاری کر دی گئی،کرپشن کی شکایات کے ازالے کیلئے لائسنسنگ سینٹرز کا عملہ ہر چھ ماہ بعد تبدیل ہو گا،ڈی آئی جی ٹریفک پنجاب سہیل اخترسکھیرا کی جانب سے جاری کردہ ایس اوپیز کے مطابق فیصل آباد سمیت پنجاب بھرکی لائسنسنگ برانچزمیں تعینات عملیکینام اور تعیناتی کا عرصہ ڈی ائی جی ٹریفک دفتر بھجوانے


کاحکم دیا گیا۔انسپکٹر لائسنسنگ،کمپیوٹر آپریٹر،ڈیوٹی آفیسر،ٹکٹنگ آفیسر کی تعیناتی چھ ماہ کے لئے ہو گی،چالان کلرک،ریڈر ڈی ایس پی،ایم ٹی او،او ایس آئی،انچارج یونیفارم سٹور کی تعیناتی بھی چھ ماہ کے لئے ہو گی البتہ ریڈر سی ٹی او ایک سال کے لئے تعینات ہو گا۔علاوہ ازیں لائسنسنگ برانچ اور لائنز کے عملے کی چھ ماہ بعد ٹرانسفر پوسٹنگ ضروری قرار دے دی گئی،ہر چھ ماہ بعد عملہ تبدیل کر کے ڈی آئی جی ٹریفک پنجاب دفتر رپورٹ بھجوانا ہو گی۔


زیرو پوائنٹ

نئی سیاسی کھچڑی

’’کرکٹ اگر مذہب ہوتا تو پورا برصغیر اس مذہب کا پیروکار ہوتا‘‘ یہ فقرہ کسی نے کہا تھا اور سچ کہا تھا‘ یہ واقعی حقیقت ہے سارک ممالک کرکٹ کے جنون میں مبتلا ہیں اور یہ خواہ کتنے ہی منقسم کیوں نہ ہوں یہ لوگ کرکٹ پر ایک ہو جاتے ہیں‘ پاکستان بھی اس جنون کی اعلیٰ ترین مثال ہے‘ ....مزید پڑھئے‎

’’کرکٹ اگر مذہب ہوتا تو پورا برصغیر اس مذہب کا پیروکار ہوتا‘‘ یہ فقرہ کسی نے کہا تھا اور سچ کہا تھا‘ یہ واقعی حقیقت ہے سارک ممالک کرکٹ کے جنون میں مبتلا ہیں اور یہ خواہ کتنے ہی منقسم کیوں نہ ہوں یہ لوگ کرکٹ پر ایک ہو جاتے ہیں‘ پاکستان بھی اس جنون کی اعلیٰ ترین مثال ہے‘ ....مزید پڑھئے‎