خود کو گولی مارنا جنید کے ساتھ رہنے سے بہتر ہے، ڈاکٹر ماہا شاہ ان نشہ آور چیزوں کی عادی تھی، چالان میں تہلکہ خیز انکشاف

  ہفتہ‬‮ 27 فروری‬‮ 2021  |  21:19

کراچی (آن لائن) ڈاکٹر ماہا شاہ کیس میں اہم پیش رفت سامنے آئی ہے، کیس کے چالان میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ڈاکٹر ماہا کوکین اور دیگر نشہ آور چیزیں استعمال کرنے کی عادی تھیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق جوڈیشل مجسٹریٹ جنوبی کراچی کی عدالت نے ڈاکٹر ماہا شاہ کیس میں حتمی چالان منظور کرتے ہوئےڈی جے ساوتھ کو بھیج دیا۔چالان میں جنید، سید وقاص، تابش یاسین، سعد ناصر کو ملزمان نامزد کیا گیا تھا۔چالان میں کہا گیا ہے کہ ڈاکٹر ماہا پہلے ہی پیغام دے چکی تھی کہ جنید کی وجہ ہی میری موت ہو گی، ڈاکٹر ماہا


نے دل برداشتہ ہو کر خود کو گولی مارنا جنید کے ساتھ رہنے سے بہتر سمجھا۔چالان میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ڈاکٹر ماہا کوکین اور دیگر نشہ آور چیزیں استعمال کرنے کی عادی تھیں۔ڈاکٹر ماہا کی سی ڈی آر سے ثابت ہوا کہ وہ منشیات فروش گروہ سے رابطے میں تھیں۔چالان کے متن کے مطابق ملزم جنید اور وقاص کو ڈی این اے کے نمونے لینے کیلئے 5 نوٹس دیئے گئے مگر وہ پیش نہیں ہوئے۔چالان کے متن میں کہا گیا ہے کہ دورانِ تفتیش جنید انکشاف کر چکا ہے کہ ڈاکٹر ماہا سے اس کی گہری دوستی تھی۔چالان کے مطابق ملزمان ڈے این اے ٹیسٹ کیلئے ٹال مٹول سے کام لے رہے ہیں، جس کی وجہ سے ملزمان ثبوتِ جرم اور شواہد غائب کرنے کا باعث بن رہے ہیں۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

12ہزار درد مندوں کی تلاش

ارشاد احمد حقانی (مرحوم)’’ ریڈ فائونڈیشن‘‘ کا پہلا تعارف تھے‘ حقانی صاحب سینئر صحافی تھے‘ سیاسی کالم لکھتے تھے اور یہ اپنے زمانے میں انتہائی مشہور اور معتبر تھے‘ میری عمر کے زیادہ تر صحافی ان کی تحریریں پڑھ کر جوان ہوئے اور صحافت میں آئے‘ حقانی صاحب ہر رمضان میں چند قومی این جی اوز اور خیر کا کام ....مزید پڑھئے‎

ارشاد احمد حقانی (مرحوم)’’ ریڈ فائونڈیشن‘‘ کا پہلا تعارف تھے‘ حقانی صاحب سینئر صحافی تھے‘ سیاسی کالم لکھتے تھے اور یہ اپنے زمانے میں انتہائی مشہور اور معتبر تھے‘ میری عمر کے زیادہ تر صحافی ان کی تحریریں پڑھ کر جوان ہوئے اور صحافت میں آئے‘ حقانی صاحب ہر رمضان میں چند قومی این جی اوز اور خیر کا کام ....مزید پڑھئے‎