کورونا میک اپ اور پلاسٹک سرجری سے نہیں ڈرتا،مریم نواز نے کورونا کو گود لے لیا،غیر سنجیدہ ٹوئٹس پر پی ٹی آئی کا آفیشل اکاؤنٹ تنقید کی زد میں

  ہفتہ‬‮ 21 ‬‮نومبر‬‮ 2020  |  22:01

اسلام آباد (این این آئی)حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف کا آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ ’غیر سنجیدہ‘ ٹوئٹس کے باعث تنقید کی زد میں آگیا۔اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کی جانب سے 22 نومبر کو خیبرپختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں حکومتی اجازتنہ ملنے کے باوجود بھی جلسہ کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔مقامی انتظامیہ کی جانب سے کورونا کی صورتحال کے پیش نظر اجازت نہیں دی گئی تاہم اب ملک کا سیاسی ماحول بھی گرم ہوگیا ہے اور سوشل میڈیا پر حریفوں کے خلاف پوسٹیں لگائی جانے لگیں،حکمران جماعت کے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر


مریم نواز اور دیگر قائدین کی تصاویر کورونا پیغامات کے ساتھ شیئر کی گئی ہیں۔مریم نواز کے گلگت بلتستان میں کیے گئے ایک جلسہ عام کی تصویر لگا کر کہا گیا کہ کورونا میک اپ اور پلاسٹک سرجری سے نہیں ڈرتا، بزرگ سماجی فاصلے میں خاص خیال رکھیں۔اسی طرح پی ڈی ایم رہنماؤں کی تصاویر لگا کر کہا گیا کہ کورونا اور پی ڈی ایم کے درمیان ایم او یو پر دستخط، پاکستان میں آئندہ مل کر کام کرنے پر اتفاق۔ اس پوسٹ کو پی ٹی آئی کے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ سے ری ٹوئٹ کیا گیا ہے۔ایک اور پوسٹ جس کو پاکستان تحریک انصاف کے آفیشل اکاؤنٹ سے ری ٹوئٹ کیا گیا ہے، اس میں مریم نواز ایک بچے کو گود میں اٹھائے ہوئے ہیں اور اس پر کہا گیا ہے کہ مریم نواز نے کورونا کو گود لے لیا۔اس کے علاوہ بھی دیگر سیاسی مخالفین کے حوالے سے پوسٹیں کی گئی ہے تاہم سوشل میڈیا صارفین نے اس عمل پر سخت ناگواری کا اظہار کیا ہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

بڑے چودھری صاحب

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎