جس مندر کی ابتدا ہی انتشار سے ہوئی ہو اس کا وجود کیسے ممکن ہے؟پیر نورالحق قادری بھی کھل کر بول پڑے

  ہفتہ‬‮ 4 جولائی‬‮ 2020  |  23:29

راولپنڈی(آن لائن)وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری نے کہا ہے کہ اسلام آباد میں مندر کی تعمیر کیلئے کسی قسم کے فنڈز نہیں دیئے گئے فنڈز دینے یا نہ دینے کا فیصلہ اسلامی نظریاتی کونسل فیصلہ کرے گی جس مندر کی ابتدا ہی انتشار سے ہوئی ہو اسکا وجود کیسے ممکن ہیوزیر اعظم اتحاد بین المسلمین کے لئے بہت اچھی سوچ رکھتے ہیں تمام مسالک کے لئے ہماری یکساں پالیسی ہے موجودہ صورتحال میں علما پربھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے صحابہ کرام اور اہل بیت کی توہین حرام ہے فسادات پھیلانے والے عناصر سے اعلانیہ بیزاری وقت


کی ضرورت ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کی شام عید گاہ شریف میں اتحاد امت کانفرنس سے خطاب اور صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا کانفرنس سے اسلامی نظریاتی کونسل کے چیئرمین ڈاکٹر قبلہ ایاز،مولانا طاہر اشرفی، سجادہ نشین عید گاہ شریف پیر حسیب الرحمان، علامہ محمد امین شہیدی، علامہ عارف حسین واحدی، مولانا پیر امین الحسنات، علامہ راجہ ناصر عباس جعفری سمیت دیگر علما کرام نے بھی خطاب کیا پیر نور الحق نے کہا کہ ہم سب کو مل کر اسلام دشمن قوتوں کی سازشوں کو ناکام بنانا ہو گا، علماء کرام امت مسلمہ کے تمام مسائل کا حل اتحاد میں مضمر ہے موجودہ صورتحال میں علما کرام کو اپنا کردار ادا کرنا ہے انہوں نے کہا کہ ہمارا معاشرہ تضادات کا شکار ہے فرقہ ورانہ ماحول کو دیکھتے ہوئے حکومت کی خواہش ہے کہ تمام علماء کرام کو ایک پیج پر لایا جائے جو عناصر بھی فسادات پھیلانے کی کوشش کر رہے ہیں ان سے بیزاری کا اعلانیہ اظہارِ کرنا ہے ہماری آج کی کانفرنس کا یہی مقصد ہے جہاں عملدرآمد کی ضرورت ہے وہاں تک پہنچا جائے گاعلماکرام سے گزارش ہے کہ اپنی خانقاہوں میں بھی اتحاد بین المسلمین کی ضرورت کو اجاگر کریں وزیراعظم عمران خان اس حوالے سے بہت اچھی سوچ رکھتے ہیں پاکستان کی پالیسی تمام مسالک اور سب کیلئےایک جیسی ہیں سعودی عرب ایران کشیدگی میں پاکستان نے اپنا بھرپور کردار ادا کیا انہوں نے کہا کہ ریاست علماء کو اعتماد میں لے کر سخت کاروائی کرے گی مندر کے حوالے سے کافی بحث ہو چکی اسلام اقلیتوں کے حقوق کا درس دیتا ہے اسلام آباد میں 2017 میں مندر کیلئے زمین دی گئی تھی ابھی تک مندر کیلئے کسی قسم کے فنڈز نہیں دیئے گئے فیصلہ ہونا باقی ہے کہ فنڈز دینا چاہیے یا نہیں اسلامی نظریاتی کونسل فیصلہ کرے گی مندر سرکاریفنڈز سے بننا چاہئے یا نہیں جس مندر کی ابتدا ہی انتشار سے ہوئی ہو اسکا وجود کیسے ممکن ہے مولانا طاہر اشرفی نے کہا کہ صحابہ کرام اور اہل بیت کی توہین حرام ہے اہل بیت اور صحابہ کی توہین کرنے والے کو انسان ہی نہیں سمجھتاریاستی اداروں کو ان افراد پر بھی نظر رکھنا ہوگی جو بذریعہ دبئی بھارت پہنچتے ہیں اور پھر پاکستان آکر فرقہ واریت پھیلاتے ہیں گستاخی کے مرتکب شخص کا معافی نامہ قبول نہیں گستاخی کے مرتکب شخص کی سزا بڑھانے کے لئے قانون سازی کرنا ہو گی۔


موضوعات: