بجٹ میں سرکاری ملازمین کی آمدن پر ٹیکس کٹوتی کی شرح ماہانہ نہیں سالانہ بنیاد پرہوگی، بڑا اعلان کردیاگیا

  بدھ‬‮ 26 جون‬‮ 2019  |  22:00

پشاور(این این آئی) خیبر پختونخوا کے وزیر خزانہ تیمور سلیم جھگڑا نے واضح کیا ہے کہ خیبر پختونخوا کے سالانہ بجٹ 2019-20 میں سرکاری ملازمین پر کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا گیا بلکہ ٹیکس کٹوتی  کی شرح میں معمولی ردو بدل کی گئی ہے،انہوں نے مزید کہا ہے کہ بجٹ میں صوبائی سرکاری ملازمین کی آمدن پر ٹیکس کٹوتی کی شرح سالانہ بنیاد پر مقرر کی گئی ہے جبکہ بعض اخبارات میں ٹیکس کٹوتی کی شرح کو ماہانہ بنیاد پر شائع کیا گیا تھا جس کی وجہ سے سرکاری ملازمین میں تشویش پائی جارہی تھی۔ وزیر خزانہ تیمور سلیم جھگڑا سے


خیبرپختونخوا سیکرٹریٹ ایمپلائز کوارڈینیشن کونسل کے نمائندہ وفد کی بدھ کے روز ہونے والی ملاقات کے موقع پر صوبائی وزیر نے یہ وضاحت پیش کی۔وفد کی سربراہی کونسل کے صدر حبیب اللہ کررہے تھے جبکہ دیگر یونین کے صدور طارق رحمان،شاہ بخت یوسفزئی،منظور خان،جابر بنگش اور سید گل رحمان بھی ملاقات میں شریک تھے۔وزیر خزانہ نے وفد کو یقین دلایا کہ حکومت سرکاری ملازمین کی فلاح و بہبود کے لئے تمام تر وسائل بروئے کار لارہی ہے اور ان کے تمام جائز اور حل طلب مطالبات کو پورا کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ حکومت سرکاری ملازمین کے لئے ہاوئسنگ سکیم،کار سکیم اور ہیلتھ کارڈ کے اجراء پر غور کررہی ہے اور اس سلسلے میں جلد مثبت پیش رفت متوقع ہے۔انہوں نے سرکاری ملازمین پر بھی زور دیا کہ وہ سرکاری امور کی بہتر انداز میں انجام دہی کے لئے پوری محنت اور لگن سے کام کریں۔ خیبر پختونخوا کے وزیر خزانہ تیمور سلیم جھگڑا نے واضح کیا ہے کہ خیبر پختونخوا کے سالانہ بجٹ 2019-20 میں سرکاری ملازمین پر کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا گیا بلکہ ٹیکس کٹوتی  کی شرح میں معمولی ردو بدل کی گئی ہے

موضوعات:

loading...