کیا ماڈل ٹاؤن میں انسان نہیں چیونٹیوں کو مارا گیا تھا؟لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے پر طاہر القادری آگ بگولا،معاملہ کہاں لے جانیکا اعلان کردیا؟

  بدھ‬‮ 26 ستمبر‬‮ 2018  |  15:38

لاہور(سی پی پی) پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری نے سانحہ ماڈل ٹاؤن بارے لاہورہائیکورٹ کے فیصلے کو عدالت عظمیٰ میں چیلنج کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے منصوبہ ساز طلب نہیں ہوں گے تو انصاف کیسے ہوگا۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر طاہرالقادری نے لاہور ہائیکورٹ کے فل بینچ کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان کیا اور کہا کہ ملازم طلب کیے گئے مالکان نہیں۔لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس میں شریف برادرانسمیت 12 شخصیات کی طلبی کی منہاج القرآن کی درخواست مسترد کیے جانے


کے عدالتی فیصلے پر سوال اٹھاتے ہوئے ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا کہ کیا 17 جون 2014 کے دن انسان نہیں چیونٹیوں کو مارا گیا تھا اور پولیس کی دہشتگردی میڈیا کے ذریعے پوری دنیا نے دیکھی تھی۔ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا تھا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے منصوبہ ساز طلب نہیں ہوں گے تو انصاف کے تقاضے کس طرح پورے ہوں گے۔انہوں نے کہا ہم سانحہ ماڈل ٹاؤن کے مظلوموں کو انصاف دلانے تک سکون سے نہیں بیٹھیں گے ۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

روکا روکی کا کھیل

میں آج سے چھ سال پہلے بائی روڈ اسلام آباد سے ملتان گیا تھا‘ وہ سفر مشکل اور ناقابل برداشت تھا‘ رات لاہور رکنا پڑا‘ اگلی صبح نکلے تو ملتان پہنچنے میں سات گھنٹے لگ گئے‘ سڑک خراب تھی اور اس کی مرمت جاری تھی لہٰذا گرمی‘ پسینہ اور خواری بھگتنا پڑی‘ ہفتے کے دن چھ سال بعد ایک بار ....مزید پڑھئے‎

میں آج سے چھ سال پہلے بائی روڈ اسلام آباد سے ملتان گیا تھا‘ وہ سفر مشکل اور ناقابل برداشت تھا‘ رات لاہور رکنا پڑا‘ اگلی صبح نکلے تو ملتان پہنچنے میں سات گھنٹے لگ گئے‘ سڑک خراب تھی اور اس کی مرمت جاری تھی لہٰذا گرمی‘ پسینہ اور خواری بھگتنا پڑی‘ ہفتے کے دن چھ سال بعد ایک بار ....مزید پڑھئے‎