عمران خان کی جان کو خطرات لاحق۔۔۔ وزیراعظم نے اپنی نقل و حرکت محدود کردی

  پیر‬‮ 2 اگست‬‮ 2021  |  21:54

لاہور(این این آئی) وفاقی وزیراطلاعات ونشریات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ وزیراعظم کی جان کو خطرات ہیں لیکن وہ سکیورٹی کی پرواہ نہیں کرتے،افغانستان کے فیصلے پاکستان کی مرضی کے بغیرنہیں ہوسکتے،پریس کانفرنس میں بتاؤں گا کس طرح میڈیا کے کچھ لوگ اورباقیملکرملک کیخلاف پراپیگنڈہ کرتے ہیں،نوازشریف غصے میں ہیں اورفوج کیخلاف ان کا غصہ ختم ہی نہیں ہورہاہے، نوازشریف کوضیا ء الحق نے بنایا توپھر جس نے بنایااس نے برباد بھی کردیا، فوجی اڈے مانگنے کی بات آفیشلی نہیں ہوتی،کوئی پاگل ہی ایسی بات لکھ کردے گا۔ ایک نجی ٹی وی کو انٹرویو میں فواد چوہدری نے کہاکہ


بدقسمتی سے پاکستان ایسے ریجن میں ہے جہاں بڑے لیڈرزکی زندگیاں خطرے میں ہوتی ہیں،وزیر اعظم سے یہ لڑائی رہتی ہے کہ اپنی سکیورٹی کا خیال کریں، اب وزیراعظم نے اپنی نقل وحرکت محدود کردی ہے۔انہوں نے کہا کہ طالبان ہمارے کنٹرول میں نہیں لیکن ہمارا ان پر اثر ہے، ہم خود کو انڈرمائن کرتے ہیں، افغانستان کے فیصلے پاکستان کی مرضی کے بغیرنہیں ہوسکتے،ہمارے اوپرڈبل گیم کا الزام لگا لیکن حقیقت میں ہمارے ساتھ ڈبل گیم ہوئی، ہم نے امریکہ کا ساتھ دیا بدلے میں افغانستان میں براہمداغ جیسوں کو کیمپس دیدئیے،نوازشریف نے ظلم کیا،اجمل قصاب فوج کا ملازم نہیں تھا لیکن کلبھوشن کابھارت دفاع کررہاہے اورفیٹف میں ہم ہیں، ہمارے یہاں کچھ دانشورہیں جو ہروقت پاکستان کیخلاف بات کرتے ہیں،پریس کانفرنس میں بتاؤں گا کس طرح میڈیا کے کچھ لوگ اورباقی مل کر ملک کے خلاف پراپیگنڈہ کرتے ہیں،یہ شرمناک نیٹ ورک ہے جس میں نوازشریف، میڈیا کے لوگ اورکچھ اورمل کر فوج کے خلاف پراپیگنڈہ کرتے ہیں، نوازشریف غصے میں ہیں اورفوج کیخلاف ان کا غصہ ختم ہی نہیں ہورہاہے، نوازشریف کوضیا ء الحق نے بنایا توپھر جس نے بنایااس نے برباد بھی کردیا، یہ نہیں ہوسکتا کہ سی وی لے کرمریم اوربلاول کہیں کہ وراثتی جائیداد کی وجہ سے اب وہ پارٹیوں کے لیڈرزہیں، بدقسمتی سے ان کی پارٹی کے رہنماؤں نے بھی آواز نہیں اٹھائی، چودھری نثار بولے اورفارغ ہوگئے۔‎


زیرو پوائنٹ

دو ہزاربچوں کا محسن

چترال کے دو حصے ہیں‘ اپر چترال اور لوئر چترال‘ دونوں اضلاع الگ الگ ہیں‘ لوئر چترال دریا کے کنارے آباد ہے اور وادی نما ہے جب کہ اپر چترال پہاڑوں پر چپکے‘ لٹکے اور پھنسے ہوئے دیہات کی خوب صورت ٹوکری ہے‘ ہم اتوار کی صبح اپر چترال کے ضلعی ہیڈ کوارٹر بونی کے لیے روانہ ہوئے‘ سفر مشکل ....مزید پڑھئے‎

چترال کے دو حصے ہیں‘ اپر چترال اور لوئر چترال‘ دونوں اضلاع الگ الگ ہیں‘ لوئر چترال دریا کے کنارے آباد ہے اور وادی نما ہے جب کہ اپر چترال پہاڑوں پر چپکے‘ لٹکے اور پھنسے ہوئے دیہات کی خوب صورت ٹوکری ہے‘ ہم اتوار کی صبح اپر چترال کے ضلعی ہیڈ کوارٹر بونی کے لیے روانہ ہوئے‘ سفر مشکل ....مزید پڑھئے‎