پنجاب میں سینٹ کے تمام جماعتوں کے امیدوار بلامقابلہ کیسے کامیاب ہوئے، چوہدری شجاعت حسین نے راز کھول دیا

  ہفتہ‬‮ 27 فروری‬‮ 2021  |  22:35

لاہور(این این آئی) پاکستان مسلم لیگ (ق) کے صدر و سابق وزیراعظم چودھری شجاعت حسین سے مختلف رہنماؤں نے ملاقات کی اور سینیٹ انتخابات کے حوالے سے مبارکباد پیش کی۔ ملاقات میں سالک حسین، سلیم بریار، شافع حسین، محمد خان بھٹی، صباحت الٰہی اور رانا خالد بھی موجود تھے۔ چودھری شجاعت حسین نے گفتگو کرتےہوئے کہا ہے کہ سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی کی ذاتی کاوشوں سے پنجاب میں سینیٹ کے تمام امیدوار بلامقابلہ منتخب ہو گئے، جو مثال پنجاب نے پیش کی ہے اس کی تقلید باقی صوبوں کو بھی کرنی چاہئے اور سینیٹ سمیت قومی مسائل پر بھی


ایسے ہی یکجہتی کو پروان چڑھایا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ چودھری پرویزالٰہی نے دیگر سیاسی جماعتوں کے سربراہوں جن میں پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین سابق صدر آصف علی زرداری اور ن لیگ کے سرکردہ رہنماؤں سے بات کر کے انہیں اعتماد میں لیا اور انہی رابطوں کی وجہ سے تمام امیدوار بلامقابلہ سینیٹر منتخب ہو گئے۔ انہوں نے کہا کہ اسی طرح کی مثال ماضی میں بھی ملتی ہے اس کا سہرا بھی ہمارے خاندان کے سر جاتا ہے، ہم نے بات چیت کے ذریعے ہی صوبہ سرحد (موجودہ کے پی کے) میں سینیٹ کا معاملہ حل کروایا تھا جب سردار تنویر اکیلے امیدوار رہ گئے تھے، سب نے کوشش کی لیکن انہوں نے ہمارے کہنے پر ہی دستبردار ہونے کا اعلان کیا اور حاجی بلور، غلام احمد بلور اور دیگر رہنما بلا مقابلہ سینیٹر منتخب ہو گئے تھے، سردار تنویر کے ساتھ جو وعدے کیے گئے تھے وہ تو پورے نہ ہو سکے لیکن انہوں نے جو وعدہ ہمارے ساتھ کیا تھا اس کو نبھا کر اصولی سیاست کو پروان چڑھایا۔ چودھری شجاعت حسین نے کہا کہ اس مرتبہ پنجاب میں جوصورتحال پیدا ہوئی تھی اور ہر کوئی اپنی جگہ چہ مگوئیوں میں مصروف تھا اس میں چودھری پرویزالٰہی کی بہترین حکمت عملی سے غیر معمولی مثال دیکھنے میں آئی، باقی صوبوں میں بھی سینیٹ اور دیگر قومی ایشوز پر ایسے ہی افہام و تفہیم کے جذبہ کی ضرورت ہے تاکہ سیاسی کشیدگی میں کمی آ سکے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

جوں کا توں

چاچا چنڈ میرے کالج کے زمانے کا ایک کردار تھا‘ وہ ڈپریشن اور غربت کا مارا ہواخود اذیتی کا شکار ایک مظلوم شخص تھا‘ وہ دوسروں کی ہر زیادتی‘ ہر ظلم اور ہر توہین کا بدلہ اپنے آپ سے لیتا تھا‘ لوگوں نے ”چاچا چنڈ“ کے نام سے اس کی چھیڑ بنا لی تھی‘ پنجابی زبان میں تھپڑ ....مزید پڑھئے‎

چاچا چنڈ میرے کالج کے زمانے کا ایک کردار تھا‘ وہ ڈپریشن اور غربت کا مارا ہواخود اذیتی کا شکار ایک مظلوم شخص تھا‘ وہ دوسروں کی ہر زیادتی‘ ہر ظلم اور ہر توہین کا بدلہ اپنے آپ سے لیتا تھا‘ لوگوں نے ”چاچا چنڈ“ کے نام سے اس کی چھیڑ بنا لی تھی‘ پنجابی زبان میں تھپڑ ....مزید پڑھئے‎