پرائیوٹ سکولز میں انٹر اور میٹرک کے امتحانات کھٹائی کا شکار ، آل پاکستان پرائیویٹ سکولز اینڈ کالجز ایسوسی ایشن میں بڑا مطالبہ

  منگل‬‮ 1 دسمبر‬‮ 2020  |  0:15

اسلام آباد(آن لائن) آل پاکستان پرائیویٹ سکولز اینڈ کالجز ایسوسی ایشن نے کورونا وبا کے باعث تعلیمی ادارے بند کرنے کے باعث بورڈ امتحانات کے داخلہ جات میں رکاوٹ کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیاہے کہ چھٹیوں اور آخری تاریخ میں توسیع نہ ہونے کے باعث میٹرک اور انٹر میڈیٹ کی بورڈ کلاسوں کے داخلہ جات بجھوانے میں دشواری کا سامناہے اور کہاہے کہحکومت نجی تعلیمی اداروں کے لیے فوری ریلیف پیکج کا اعلان کرے تاکہ والدین کو فیسوں کی مد میں آسانی کے ساتھ ساتھ کرائے کی عمارتوں میں چلنے والے اداروں کی مکمل بندش سے بچا


جاسکے جبکہ مطالبہ کیاہے کہ حکومت نجی تعلیمی اداروں کو بلاسود قرضے فراہم کرکے اس شعبہ کو تباہی سے بچانے میں کردار ادا کرے۔تفصیلات کے مطابق آل پاکستان پرائیویٹ سکولز اینڈ کالجز ایسوسی ایشن کا اجلاس مرکزی صدر ملک ابرار حسین کی زیر صدارت ہیڈ آفس اسلام آباد میں ہوا،اجلاس میں اشرف ہراج،راجہ الیاس کیانی،دین محمد اعوان،عرفان مظفرکیانی،رانا سہیل احمد،حفیظ الرحمان، سردار گل زبیر خان،ذوالفقار علی صدیقی،اسرار بخاری، قاسم عباس، طارق محمود، ازمان کیانی سمیت دیگر عہدیداروں نے شرکت کی۔ اس موقع پر حکومت سے مطالبہ کیاگیاہے کہ کورونا ایس او پیز پر سختی سے عمل کرنے والے نجی تعلیمی اداروں کو بند کرنے کا فیصلہ واپس لیا جائے تاکہ بچوں کامستقبل محفوظ بنانے کے ساتھ ساتھ اس شعبہ سے متعلقہ لاکھوں افراد کا روزگاربھی محفوظ بنایا جاسکے۔اجلاس میں اس بات پر بھی تشویش کا اظہار کیا گیاکہ میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کلاسز کے جو داخلہ جات بورڈ میں بجھوائے جانے ہیں چھٹیوں کی وجہ سے وہ بھی بجھوانا مشکل ہوچکاہے ایسے میں اگر آخری تاریخ میں توسیع نہیں کی جاتی تو بہت سے طلبا بورڈ امتحانات سے محروم رہ جائیں گے۔اجلاس میں اس باتکابھی مطالبہ کیا گیاہے کہ حکومت نجی تعلیمی اداروں باالخصوص کم فیسوں والے پرائیویٹ سکول مالکان کی مالی معاونت کرے تاکہ کرائے کی عمارتوں میں قائم سکولوں کا کرایہ ادا کرنے میں آسانی ہو،حکومت بلاسود قرضے بھی دے تاکہ پرائیویٹ سکول مالکانکو روزمرہ اخراجات اور اپنے بچوں کا پیٹ پالنے میں مدد مل سکے۔اجلاس میں تمام نجی تعلیمی اداروں کی نمائندہ تنظیموں کی باہمی مشاورت سے موجودہ صورتحال سے نجات کے لیے مشترکہ لائحہ عمل تیار کرنے پر بھی مشاورت کی گئی۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

ایک غلط گیند

آپ اگر موجودہ سیاسی حالات کو سمجھنا چاہتے ہیں تو پھر آپ کو دو شخصیات اور مضبوط ترین ادارے کا تجزیہ کرنا ہو گا‘ پہلی شخصیت عمران خان ہیں‘ عمران خان کے تین پہلو ہیں‘ یہ فاسٹ بائولر ہیں‘ عمران خان نے 20سال صرف بائولنگ کرائی اور بائولنگ بھی تیز ترین چناں چہ یہ فاسٹ بائولنگ ان کی شخصیت کا ....مزید پڑھئے‎

آپ اگر موجودہ سیاسی حالات کو سمجھنا چاہتے ہیں تو پھر آپ کو دو شخصیات اور مضبوط ترین ادارے کا تجزیہ کرنا ہو گا‘ پہلی شخصیت عمران خان ہیں‘ عمران خان کے تین پہلو ہیں‘ یہ فاسٹ بائولر ہیں‘ عمران خان نے 20سال صرف بائولنگ کرائی اور بائولنگ بھی تیز ترین چناں چہ یہ فاسٹ بائولنگ ان کی شخصیت کا ....مزید پڑھئے‎