پنجاب یونیورسٹی کے قریب پولیس مقابلہ گولی لگنے سے راہگیر طالبہ جاں بحق

  جمعرات‬‮ 22 اکتوبر‬‮ 2020  |  19:30

لاہور(این این آئی)ڈولفن و پولیس رسانس یونٹ اور ڈاکوؤں کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں ڈاکوؤں کی فائرنگ سے طالبہ جاں بحق ہو گئی،ڈاکوؤں کو گرفتار کرکے مقامی پولیس کے حوالے کردیا گیا۔ بتایا گیا ہے کہ پنجاب یونیورسٹی کے قریبڈولفن وپولیس رسپانس یونٹ کا ڈاکوؤں سے آمنا سامنا ہوگیا۔ڈاکوؤں نے پولیس پارٹی پر فائرنگ کردی جس کی زد میں آکر طالبہ جاں بحق ہو گئی۔بتایا گیا ہے کہ تینوں مسلح ڈاکو ؤں نے سمن آباد ملت پارک میں یکے بعد دیگرے وارداتیں کی،ڈولفن سکواڈ پی آر یو ڈاکوؤں کا تعاقب کر رہے تھے،پنجاب یونیورسٹی کے قریب ڈاکوں نے ٹیم


پر فائرنگ کر دیں۔ڈاکو کی اندھا دھند فائرنگ کی زد میں آکر فاطمہ نامی طالبہ موقع پر جاں بحق ہو گئی۔ڈولفن و پی آر یو نے تینوں مسلح ڈاکوؤں ارشد،فیصل اورحسن کو گرفتار کر لیا۔اطلاع ملنے پر مقامی پولیس بھی موقع پر پہنچ گئی ڈولفن نے گرفتار ہونے والے ڈاکو ؤٰں کو مقامی پولیس کے حوالے کر دیا۔قانونی کارروائی کے بعد جاں بحق ہونے والی لڑکی کی لاش ورثاء کے حوالے کر دی گئی۔آئی جی پنجا ب انعام غنی نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور عمر شیخ سے واقعہ کی رپورٹ طلب کر لی۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

بڑے چودھری صاحب

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎