اہم سینئر رہنماؤں نے ساتھیوں سمیت پی ٹی آئی چھوڑنے کا اعلان کر دیا

  اتوار‬‮ 4 دسمبر‬‮ 2022  |  20:05

سنجاوی (این این آ ئی)پاکستان تحریک انصاف کے سابق سینئر رہنماؤں فیاض احمد رحمانی،راز محمد زرکون نے اپنے تیس ساتھیوں کے ہمراہ تحریک انصاف سے مستعفی ہوکر بلوچستان عوامی پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سینئر صوبا ئی وزیر حاجی نورمحمد خان دمڑ کی قیادت میں بے اے پی میں شمو لیت اختیار کر نے کا اعلان کردیا۔

شمو لیت تقریب سے خطاب کر تے ہوئے فیاض احمد رحمانی راز محمد زرکون نے کہاہے کہ ہم عمران خان کی قیادت سے مطمئن ہیں لیکن بلوچستان کے صوبائی لیڈر شپ سے مکمل مایوس ہوکر اور سینئر وزیر حاجی نور محمد دمڑ کی کارکردگی سے مطمئن ہوکر ان کے کاروان میں شامل ہوتے ہیں۔تقریب شمولیت کے پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی جنرل سیکرٹری سینئر صوبائی وزیر حاجی نور محمد دمڑ نے کہا کہ ساری پارٹیوں سے ان کے تیس تیس سالہ کارکن مایوس ہوکر ہمارے کاروان میں شامل ہورہے ہیں کیونکہ شعور پیدا ہوگیا عوام میں جان گئے کے مختلف ناموں پر مختلف سیاسی جماعتیں سیاست کرتے ہیں اقتدار میں پہنچ کر پھر کارکنوں کو بھول جاتے ہیں اور لوٹ مار میں مصروف ہوتے ہیں،اگر زیارت سنجاوی میں مسائلستان ہو اور کوئی یہ بولے کے میں بولان چترال کی سیاست کرتا ہوں یہ پاگل پن ہے،ہمیں اپنی توانائی اپنے حلقے کیلئے وقف کرنا چاہیے پہلے سنجاوی علاقہ بنانا چاہیے،اگر اپنا علاقہ بنا لیا تو پاکستان بن گیا پختونستان بن گیا،یہاں مذہب اور قومیت ودیگر ناموں پر عوام کو بہت دھوکا دیا گیا، اب عوام دھوکہ میں آ نے والے نہیں ہم روڈ ہسپتال تعلیم ملازمتیں ودیگر کام کرتے ہیں،یہی خدمت ہے سب کو دعوت دیتا ہوں کے ہمارے کاروان میں شامل ہوکر جدوجہد کرو علاقے کیلئے حق لاہو روزگار لاہو۔انھوں نے فیاض احمد رحمانی راز محمد زرکون اور ان کے ساتھیوں کو بے اے پی میں شمولیت کرنے پر مبارکباد دی۔شمولیتی پروگرام میں بے اے پی کے زیارت کے صدر عبدالستار کاکڑ،جنرل سیکرٹری حاجی خان محمد دمڑ،حاجی باز محمد ناصر،رشید ناصر ملک ایاز دمڑ،رازمحمد دمڑنصیب اللہ دمڑ،عمران پانیزئی عزیزاللہ اندڑنوراللہ جان سارنگزئی اشرف دمڑ ودیگر بھی موجود تھے۔



موضوعات:

زیرو پوائنٹ

چھوٹے چھوٹے فیصلے

پشاور میں 30 جنوری کو پولیس لائینز میں خودکش حملہ ہوا‘ یہ حملہ انتہائی خوف ناک تھا‘ 103 لوگ شہید اور 217 زخمی ہو گئے‘ ایسے حملوں کے بعد پوری دنیا میں تفتیش اور تحقیقات شروع ہو جاتی ہیں اور یہ کام ہمیشہ وہ لوگ کرتے ہیں جو علاقے‘ لوگوں اور روایات سے واقف ہوتے ہیں اور جن کے لوکل ....مزید پڑھئے‎

پشاور میں 30 جنوری کو پولیس لائینز میں خودکش حملہ ہوا‘ یہ حملہ انتہائی خوف ناک تھا‘ 103 لوگ شہید اور 217 زخمی ہو گئے‘ ایسے حملوں کے بعد پوری دنیا میں تفتیش اور تحقیقات شروع ہو جاتی ہیں اور یہ کام ہمیشہ وہ لوگ کرتے ہیں جو علاقے‘ لوگوں اور روایات سے واقف ہوتے ہیں اور جن کے لوکل ....مزید پڑھئے‎